نبیٔ کریم ﷺ نے ارشاد فرمایا : رات میں میرے رب کی طرف سے ایک آنے والا آیا۔ اور ایک روایت میں ہے کہ اپنے رب کو نہایت ہی جمال کے ساتھ تجلی کرتے ہوئے دیکھا۔ اس نے فرمایا : اے محمد(ﷺ)! میں نے کہا ’’لبیک و سعدیک ‘‘ اس نے کہا تمہیں معلوم ہے کہ ملائکہ کس امر میں بحث کرتے ہیں ؟ میں نے عرض کیا : نہیں جانتا ۔اس نے اپنا دست قدرت میرے شانوں کے درمیان رکھا یہاں تک کہ اس کی ٹھنڈک میں نے اپنے سینے میں پائی۔ تو جو کچھ آسمانوں اور زمینوں میں ہے اور جو کچھ مشرق و مغرب کے درمیان ہے میں نے جان لیا ۔پھر فرمایا : اے محمد (ﷺ )جانتے ہو ملائکہ کس چیز میں بحث کر رہے ہیں۔میں نے عرض کیا ہاں : درجات و کفارات اور جماعتوں کے چلنے اور سردی اور پورا وضو کرنے اور ایک نماز کے بعد دوسری نماز کے انتظار میں ، اور جس نے اس کی محافظت کی خیر کے ساتھ زندہ رہے گا اور خیر کے ساتھ مرے گا اور اپنے گناہوں سے ایسا پاک ہو گا جیسے اپنی ماں کے پیٹ سے پیدا ہواتھا ۔ (ترمذی شریف )