حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ داہنی جانب جماعت میں شامل ہونے والے پر اللہ اور فرشتے صلوٰۃ پڑھتے ہیں ۔ (ابن ماجہ)

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اللہ فرماتے ہیں کہ جو اچھی طرح وضو کرکے مسجد جائے اور لوگوں کو اس حالت میں پائے کہ نماز پڑھ چکے ہیں تو اللہ اسے بھی جماعت سے نماز پڑھنے والوں کے مثل ثواب دے گا ۔ اور ان کے ثواب سے کچھ کم نہ کرے گا ۔ (ابو داؤد )

میرے پیارے آقا  کے پیارے دیوانو!آج اگر دنیا کا کوئی بڑا عہدیدار، سرمایہ دار ، ہم کو سلام کرے تو ہم خوشیوں سے مچل جاتے ہیں۔ لیکن میرے آقا ا ارشاد فرماتے ہیں : جماعت سے نماز پڑھنے والا اگر امام کے دائیں جانب ہو تو اس پر اللہ  اور اس کے فرشتے صلوٰۃ پڑھتے ہیں ۔ اگر اس نیت سے بندہ گھر سے نکلا کہ جماعت میں شریک ہو جائے لیکن جماعت نہ پا سکا تو اللہ اسے بھی جماعت کا ثواب عطا فرمائے گا ۔ اللہ ہم سب کو نماز با جماعت ادا کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین بجاہ النبی الکریم علیہ افضل الصلوٰۃ والتسلیم۔