کل فتاوی شامی کے مطالعہ کے دوران کھجور کے 6 نام نظر سے گزرے حاشیہ رافعی والوں نے ایک مزید نام علامہ سندھی کے حوالے سے بیان کیا تھا

یہ نام کھجور کی اقسام کے نہیں ہیں بلکہ کھجور کی عمر اور نوعیت کے اعتبار سے ہیں

چنانچہ سب سے

1.طلع کا اطلاق ہوتا ہے یہ پھل بننے سے پہلے کا نام ہے

2.پھر یہ خلال کہلاتا ہے

3.اس کے بعد بلح کا اطلاق آتا ہے پیلی اور سخت کجھور بلح کہلاتی ہے

دارالمعرفہ جو پاکستان میں کوئٹہ سے مقامی نام سے شائع ہوا ہے اس میں ح لکھا ہوا ہے بلح جبکہ دار الحدیث مکتبے کی شامی میں بلخ لکھا ہے

4.اس کے بعد بسر کا لفظ کھجور پر بولا جاتا ہے یہ وہ کجھور ہوتی ہے جو ابھی پوری براؤن نہیں ہوتی اور پیلا پن اس میں رہتا ہے

5.اس کے بعد اسے رطب کہا جاتا ہے

یہ فل شیرے والی ہوتی ہے

6.جب کھجور بالکل پک کر براؤن اور شیرہ کچھ خشک ہونے لگتا ہے تو اسے تمر کہا جاتا ہے

اگرچہ عرف عام میں ہر قسم کی کھجور کو بھی تمر کہتے ہیں

شامی میں عبارت یہ ہے

النخلۃ علی ست مراتب اولھا طلع وثانیھا خلال وثالثھا بلح ورابعھا بسر وخامسھا رطب وسادسھا تمر

ایک جگہ میری نظر سے یہ فرق بھی گزرا

الخلاصة:

أرأيت البلح؟ هو ذاك الأصفر الصلب

إذا أصبح هذا البلح غضا كله مع تغير لونه فهو بسر.

و إذا أصبح نصفه غضا مع تغير لونه فهو مناصف.

البسر إذا بدأ يجف قليلا مع بقاء كثير من الماء فيه و بدأت تتميز قشرته عن لبه فهو رطب.

الرطب إذا شاخ و ذهب ماؤه و كثرت التجاعيد في وجهه أصبح تمرا.

بہت ساری ویڈیو بھی اس فرق کی ہیں یو ٹیوب پر لیکن میوزک کی آمیزش کی وجہ سے شئیر نہیں کی جا رہی خاص بلح کجھور کے فوائد پر دو عدد مختلف لنک حاضر ہیں

https://youtu.be/gYBlfyZIoFM

https://youtu.be/wweubrN6-7s

🖌 از قلم مفتی علی اصغر

ہروز جمعہ 21 جمادی الاولی 1441

17 جنوری 2020

 

.

.

.