شوہر کو منا کر دم لو

شوہر کو منا کر دم لو

غایت درجہ شوہر سے محبت کے نتائج پر کلام کرتے ہوئے ہمارے آقا و مولا ﷺ نے ارشاد فرمایا یہ ساتویں علامت ہے اسکے ساتھ ایسا کوئی حادثہ شوہر کی طرف سے پیش آیا جس پر اسے غصہ آ گیا اور اس پر شوہر ناراض ہو گیا جو حقیقت میں شوہر ہی کی غلطی ہے اور معافی اسی کو مانگنی چاہیئے مگر یہ اسے بھی اپنی غلطی تسلیم کر لیتی ہے کہ مین نے غصہ کیا کیوں! اور اسے برا بھلا کہہ دیا جائے اور اس سے اسکی دلشکنی ہو پھر بھی اس پر شوہر کی محبت کا اتنا غلبہ ہے کہ اسے بھی سنی ان سنی کر دیتی ہیِ اور اسکے کسی قصور کی وجہ سے اسکے شوہر کو غصہ آجائے اور وہ ناراض ہو جائے تو وہ محبت کے غلبہ کی وجہ سے اس کی جدائی ایک لمحہ کے لئے بھی برداشت نہیں کر سکتی بلکہ وہ اسے منانے کی کوشش کرتی ہے اور وہ نہیں مانتا تو یہ مایوس ہوکر چھوڑ نہیں دیتی ہے بلکہ اس کے ہاتھ میں اپنا ہاتھ رکھ کر کہتی ہے شوہر تم جب تک خوش نہ ہو جاؤ میں سو نہیں سکتی میں تمہیں راضی کرکے ہی دم لونگی ، اور مبالغہ آرائی نہیں بلکہ واقعۃ وہ ایسا ہی کرے تو اس سے دشمنی باقی نہیں رہ سکتی اور بات آگے نہیں بڑھ پاتی بلکہ الجھے ہوئے مسئلہ کا حل فورا نکل آتا ہے 

کامیاب نسخہ

یہ نبی پاک ﷺ کا بتایا ہوا اتنا کامیاب نسخہ ہے کہ کسی عورت کا کوئی شوہر اسکا بے وفا نہیں رہ سکتا بلکہ کتنا ہی بڑا ظالم ہو چند ہی دنوں میں دل و جان سے اس پر نثار ہو جائے گا،چند دنوں کی زحمتیں اسکے لئے دائمی سکون کا ذریعہ بن جائیں گی، اور کیوں نہ ہو یہ فرمانے نبی ﷺ پر عمل کا ثمرہ ہے،اور کیوں نہ ہو نبی ﷺ کے فرمان پر عمل کرنے سے اللہ محبوب بھی بناتا ہے اور کامیابی کا وعدہ بھی دیتا ہے،فاتنعونی یحببکم اللہ تم نبی ﷺ کی پیروی کرو اللہ تعالیٰ تمہیں محبوب بنا لیگا،من یطیع اللہ و رسولہ فقد فاز فوزا عظیما جو اللہ اور اسکے رسول کی اطاعت کرتا ہے تو یقینا وہ بڑی کامیابی پاچکا

بے وفا میں بوئے وفا مضمر ہے ۔ سنت کی چابی لگا کے دیکھو

2 comments

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.