(۱۷) اللہ تعالی بندوں سے قریب ہے

۲۳۔ عن أبی موسی الأشعری رضی اللہ تعالیٰ عنہ قال : قال رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم: یَا أیہا النَّاسُ ! أرْبعُوا علٰی أنْفُسِکُمْ فَإنّکُمْ لاَ تَدْعُونَ أصَمَّ وَ لاَ غَائِباً ۔ إنّکُمْ تَدْعُونَ سَمِیْعاً قَرِیْباً وَ ہُوَ مَعَکُمُ ۔

حضرت ابو موسی اشعری رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: اے لوگو ! اپنے اوپر مہربانی کر و ( بلند آواز سے رب کو نہ پکارو) کہ تم کسی بہرے اور غائب کو نہیں پکار رہے ہو ۔ بلا شبہ تم سمیع و قریب خدا وند قدوس کو پکار رہے ہو جو تمہارے ساتھ ہے ۔ ۱۲م فتاوی رضویہ ۱۱/۲۵۶

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۳۔ الجامع الصحیح للبخاری، باب لا حول و لا قوۃالا باللہ، ۲/۹۷۸

الصحیح لمسلم ، کتاب الذکر ، ۲/۳۴۶ ٭ السنن لابی داؤد، ابواب الوتر ، ۲۱۴

السنن الکبری للبیہقی، ۲/۱۸۴ ٭ کنز العمال لعلی المتقی، ۳۲۴۳، ۲/۸۲

اتحاف السادۃ للزبیدی، ، ۵/۳۶ ٭ فتح الباری للعسقلانی، ۱۱/۵۰۰

الدر المنثور للسیوطی، ۱/۱۹۵ ٭ التفسیر للقرطبی، ۱/۱۵

المسند لاحمد بن حنبل ، ۴/۳۹۴ ، ۴۰۲،۴۰۳، ۴۰۷، ۴۱۸، ۴۱۹