الفصل الثالث

تیسری فصل

حدیث نمبر35

روایت ہے حضرت سعید بن حارث بن معلے سے ۱؎فرماتے ہیں کہ ہم کو ابوسعید خدری نے نماز پڑھائی تو جب سجدہ سے سر اٹھایا اور جب سجدہ کیا اور جب دو رکعتوں سے اٹھے تو اونچی آواز سے تکبیرکہی ۲؎ اور فرمایا کہ میں نے نبی صلی اللہ علیہ و سلم کو یونہی دیکھا۔(بخاری)

شرح

۱؎ آپ انصاری ہیں،مشہور تابعین میں سے ہیں،عرصہ دراز تک مدینہ منورہ کے قاضی رہے۔

۲؎یعنی نماز کی تمام تکبیریں بلند آواز سے کہیں۔معلوم ہوا کہ امام کو تکبیراتِ نماز اونچی کہنی چاہئیں مقتدیوں کی اطلاع کے لیےمگر ضرورت سے زیادہ آواز نہ نکالے،خصوصًا جب کہ اس میں تکلیف بھی ہو لہذا جس کے پیچھے دو تین مقتدی ہوں وہ بہت چیخ کر تکبیریں نہ کہے۔