(۱۹) اللہ تعالیٰ کے قبضہ میں زمین و آسمان ہیں

۲۷ ۔ عن عبد اللہ بن عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہما قال: رأیت رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم و ہو علی المنبر یقول: یأخذ الجبارُ سَموٰتِہٖ وَأرْضِہٖ بِیَدَیْہِ، وَ قبض رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم یدیہ و جعل یقبضہما و یبسطہما ، قال : ثم یقول : أنا الرحمن أناالملک ، أین الجبارون ، أین المتکبرون؟ و تمایل رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم عن یمینہ و عن شمالہ حتی نظرت إلی المنبر یتحرک من أسفل شیٔ منہ حتی إنی أ قول أساقط ہو برسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم ۔ حاشیۃ معالم ص ۳۸

حضرت عبد اللہ بن عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ میںنے رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم کو منبر اقد س پر فرماتے ہوئے سنا ۔ اللہ رب العزت زمین و آسمان کو اپنے دونوں ؎دست قدرت میں لیگا ۔ حضور سید عالم صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نے اپنے دونوں ہاتھوں کو ایک دوسرے سے پکڑا اوران کو تنگ اور کشادہ کیا اور فرمایا ۔ پھر اللہ رب العزت فرمائے گا ۔ میں رحمن ہو ں ۔ میں بادشاہ ہوں ۔ کہاں ہیں اپنی عظمت کا اظہار کرنیوالے ؟ کہاں ہیں اپنی بڑائی جتانے والے؟ پھر حضور اپنی داہنی اور بائیں جانب جھکے ۔ یہاں تک کہ میںنے منبر کو دیکھا کہ نیچے سے ہٹنے لگا ۔ میں سمجھا کہیں منبرگر نہ جائے ۔ ۱۲م

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۷۔ التفسیر للطبری، ۲۴/۲۷

السنن لابن ماجہ ، کتاب الزہد، ۳۱۶