۲۸۔ عن عبد اللہ بن عمررضی اللہ تعالیٰ عنہما قال:قال رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم : یَطْوِی اللہ تعالیٰ السَّمواتِ یومَ القِیامَۃِ ثُم یأخُذُہُنّ بِیَدِہِ الْیُمْنٰی ثُم یقولُ أنا الملکُ ۔أین الجبارون ؟أین المتکبرون ؟ ثم یَطْوِی الأرْضِیْنَ ثُم یأخُذُہُنّ ،قَالَ إبن العَلائِ : بِیَدہ الأخْرٰی ۔ ثُم یقولُ : أنا الملِکُ ۔ أین الجبارون َ ؟ أین المتکبرونَ؟۔

حضرت عبد اللہ بن عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہما سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا ۔ اللہ تعالیٰ آسمانوں کو لپیٹ دیگا ،پھر انکو اپنے دست قدرت میں لیگا،پھر فرمائیگا : میں بادشاہ ہوں ۔ کہاں ہیں اپنی شاہی عظمت جتانیوالے؟ کہاں ہیں اپنی بڑائی ہانکنے والے ؟پھر زمینوں کو لپیٹے گا، پھر انکو اپنی گرفت میں لے گا ابن العلاء نے کہا: اپنے دوسرے دست قدرت میں لے گا، پھر فرمائیگا : میں بادشاہ ہوں ۔ کہاں ہیں اپنے شاہی خمار میں سرکشی کرنیوالے؟ اور کہاں ہیںاپنی بڑائی کی ڈینگ مارنیوالے؟۱۲م حاشیہ معالم ۳۹

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۸۔ الصحیح لمسلم ، المنافقین ، ۲/۳۷۰ ٭ الضعفاء للعقیلی ۳/۱۵۴

السنن لابی داؤد ، السنۃ ، ۲/۶۵۱ ٭ الاسماء و الصفات للبیہقی، ۲۳۷

الاتحافات السنیۃ ، ۳۱۷ ٭ زار المسیر لابن الجوزی ، ۷/۹۶

السنن لابن ابی العاصم ، ۱/۲۴۱