اپنا کے دیکھو

ایک مرتبہ کی بات ہے کہ ایک شخص میرے پاس آیا اور روتے ہوئے اپنی لڑکی کی داستان سنانا شروع کیا،مولانا صاحب ابھی چند روز ہوئے میری بیٹی کی شادی ہوئی، نہ جانے میاں بیوی میں کیا ہو گیا کہ بہت لڑتے ہیں ،ہاتا پائی تک کی نوبت آجاتی ہے،لڑکی بہت ڈر گیٔ ہے سسرال کا نام سن کر رونے لگتی ہے، آپ کوئی تعویذ بنا دیجیئے کہ ان میں محبت پیدا ہو جائے،میں نے عرض کی جناب عالی شادی سے پہلے آپنے اپنی لڑکی کو یہ تعلیم دی تھی کہ اس کے لئے اسکے شوہر کا مقام و مرتبہ کیسا عظیم الشان ہے؟ کہا نہیں،اچھا آپنے اس بات کی تحقیق کی کہ ایسا ہوتا کیوں ہے؟کہا نہیں،اچھا آپنے اپنے داماد سے اس نااتفاقی کا سبب معلوم کیا؟ کہا نہیں،میں نے عرض کی جناب عالی آپکا کام تعویذ سے نہیں بنے گا ،اس بہتریں اور پر اثر تعویذ معاشرتی نظام کے درست بنانے کے نبوی اصول پر عمل ہے،اس پر عمل کراکے دیکھئے آپ کا کام انشاء اللہ بن ہی جائے گا، آپ تو پہلے ہی مرحلہ میں تعویذ سے کام بنانا چاہتے ہیں کامیابی کیسے حاصل ہو؟آپ اپنی لڑکی کا علاج ان نصیحتوں سے کیجیئے: بیٹا جو ہوا سو ہوا اسے بھو ل جاؤ،یہ سمجھو سسرال کا آج پہلا دن ہے،اس سے پہلے کچھ ہوا ہی نہیں ہے،تم میری بیٹی ہو بوڑھے باپ کی عزت کا خیال کرکے یہ عہد کرلو سسرال میں تمہاری طرف کی کسی کمی کی شکایت سننے کو نہ ملے،غصہ نہ کرو،غصہ سے کام بنتا نہیں بگڑتا ہے،گھر والوں کی عادتیں جان لو اور عادت کے مطابق پہلے سے کام کرلو،ہر بات میں پہلے شوہر سے مشورہ لے لیا کرو، ساس اور سسر کا مرتبہ تیرے شوہر کے لئے تجھ سے بڑا ہے تو بالیقین وہ اپنے والدین کی سننے والا ہے اور تمہیں بھی یہ نصیحت کرنی ہے کہ اپنے والدین کو خوش کرنے کی پہلے کوشش کرو، بیٹی تم ان سے بھی مشورہ لے لیا کرو،مشورہ بڑی برکت والی چیز ہے قرآن پاک میں ہمارے آقا ﷺ کو اللہ تبارک وتعالیٰ نے ہماری نصیحت کے لئے فرمایا شاورہم فی الامر پیارے نبی آپ اپنے صحابہ سے مشورہ لے لیا کریں،جب مشورہ نبی کو لینے کے لئے فرمایا گیا تو اس میں کتنی برکت ہوگی؟ اس برکت سے ہمیں محروم نہیں رہنا چاہیئے،اپنی چاہت گھروالوں کی چاہت بنالو،کسی کام میں منع نہ کرو،بیٹھ رہنے سے طبیعت خراب ہوتی ہے کام کرنے سے نہیں،کام بدنی ورزش کا دوسرا نام ہے،تم کسی سے نہ روٹھو،کوئی تم سے روٹھ جائے تو اسے مناؤ،ان کاموں کو اپنی ذلت نہ سمجھو یہ ذلت نہیں تواضع ہیں،اور ہمارے نبی ﷺ نے فرمایا من تواضع للہ رفعہ اللہ،جو اللہ کے لئے منکسر المزاج بنتا ہے اللہ اسے بلند فرماتا ہے،ان اللہ لایحب المستکبرین بیشک اللہ متکبروں کو پسند نہیں فرماتا ہے،بیٹی کام کرنے میں اور مشورہ لینے میں تواضع ہے اور منع کرنے میں اور اپنی چلانے میں کبر ہے،وہ کرو جو اللہ اور رسول کی پسند کا ہے،میری بیٹی سسرال کا سمجھ کر تم نہیں کر سکتی تو اب یہ تمہارے باپ کا ارشاد ہے باپ کا سمجھ کر ہی کر لو،دیکھتے ہیں کیا ہوتا ہے؟مجھے امید ہے اس سے فائدہ ضرور ہوگا ،اور نہ ہو تو آئندہ میں تمہاری مدد کرونگا

باپ نے اس پیار بھری نصیحتوں کے ساتھ اپنی لڑکی کو سسرال پہنچایا،تب سے لیکر آج تک الحمد للہ کوئی شکایت نہ آئی اور بڑے سکون سے انکا گزارا ہو رہا ہے،اور کیوں نہ ہو اللہ اور رسول کے فرمان میں ہمارے لئے دنیا اور آخرت دونوں کی کامیابی ہے،گھر مثالی جنت اسی تعلیم پر عمل سے ہو سکتا ہے