نیک عورت کا انتخاب کیوں

ہمارے پیاری آقا ﷺ نے عورت کو نیک اور صالح بننے کے طریقے عطا فرمائے اور اس کے ذریعہ عورتوں کو نیک بننے کی دعوت دی،اور مسلمانوں کے گھروں کو جنت کا باغ بنانے کے لئے مسلمان مردوں کو بھی یہ نصیحت فرمائی کہ وہ اس مقصد عظیم کے حصول کے لئے نکاح میں نیک عورت کا انتخاب کریں،اور آپنے نیک اور صالح عورتوں کی علامت سے بھی آشنا فرمایا تاکہ کسی سے اس میں غلطی نہ ہوجائے اور اس پر زندگی بھر کراہنا نہ پڑے

شادی کا عظیم مقصد

شادی کیوں کی جاتی ہے؟خانہ آبادی کے لئے،ذہنی سکون کے لئے،ضرورتوں کی تکمیل کے لئے،اولاد صالح کے حصول کے لئے،ظالم اور جفاکار اولاد کوئی نہیں چاہتا ، سب اپنے لئے وفاداراولاد کی امید میں ہوتے ہیں،اور اسکے لئے دعائیں بھی کی جاتی ہیں جیسے حضرت ابراہیم علیہ السلام نے دعا فرمائی رب ہب لی من الصالحین اے رب مجھے صالح میں سے عطا فرما،اولاد میں سب سے زیادہ ماں کے کردار اور اس کی عادتیں منتقل ہوتی ہیں،ماں کا اثر بچہ پر زیادہ ہوتا ہے اس لئے کہ ماں کے پاس رہنے کا اسے زیادہ وقت ملتا ہے،اس لئے بیوی کے انتخاب میں فرمان نبی کا سھارا ضروری ہے،اگر سبھی مرد شادی کے انتخاب میں نبی ﷺ کے فرمان کو مد نظر رکھیں تو لڑکیوں کا ماحول اسلامی ماحول بن جائے اس لئے کہ انہیں یقین ہو جائے گا کہ دینداری سے ہٹ کر کہیں گزارا نہیں ہے،اور والدین بھی بچپن سے لڑکیوں کو اسلام پر ڈھالنے کی کوشش کریں کہ اس کے بغیر رشتہ نہ ملے گا ،ایک طرف کی مذہبی پابندی سے دوسری طرف میںآپ پابندی کی ہوا چلنے لگے گی