عرش کے سائے میں

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ مدنی آ قاﷺ اکا فرمان عالیشان ہے :’’جب روزہ دار اپنی قبروں سے نکلیں گے تو ان کے منھ سے مشک کی خوشبوکی لپیٹیں آئیں گی۔ جنت کا ایک دستر خوان ان کے سامنے رکھا جائے گا جس سے وہ کھا ئیں گے اوروہ سب عرش کے سائے میں ہوں گے‘‘۔ (غنیہ الطالبین )

میرے پیارے آقاﷺ کے پیارے دیوانو ! مذکو رہ حدیث شریف سے پتہ چلاکہ دنیا میں روزہ دار اپنے آپکو محض اللہ کی رضاکے لئے جن نعمتوں سے روکے رکھا تھا کل بروزِ قیامت اللہ اس سے بہتر اسے عطا فرمائے گا۔ یعنی وہ جنت میں بھو کا نہیں رہے گا بلکہ وہ جو چاہے گا مولیٰ اس کو عطا فرمائے گا کیوں نہ ہو فرمانبرداروں کو ایسا ہی بدلہ اللہ عطافرماتا ہے۔ اسی کا فرمان ہے۔ ’’کذٰلک نجزی المحسنین‘‘ ہم یوں ہی بدلہ دیتے ہیں نیکی کرنے والوں کو۔

لہٰذا ہمیں چاہئے کہ پروردگارد کی رضاکے لئے خودکو تیار کریں اور چند گھنٹوں کی بھو ک اور پیاس برداشت کرکے مولیٰد کو خوش کریں وہ رحیم و کریم قیامت کے دن ہمیں خوش فرمادیگا۔ دعا کریں کہ اللہ ہم سبکو اپنی رضا والی طویل عمر عطا فرمائے۔

آمین بجاہ النبی الکریم علیہ افضل الصلوٰۃ والتسلیم۔