سحری وافطار کا بیان

رسول گرامی وقار ﷺ کا فرمان عالیشان ہے’’ سحری کھائو کہ سحری کھانے میں برکت ہے ہمارے اور اہل کتاب کے روزوں میں فرق سحری کا لقمہ ہے‘‘۔ (بخاری ومسلم)

میرے پیارے آقا ﷺ کے پیارے دیوانو ! ضرور ضرور سحری کھاکر اپنے مسلمان اور غلامان رسول اہونے کا مظاہرہ کرو۔ سحری کی فضیلت میںایک اور ارشاد رسول ا کو سنو اور جھوم جائو !

طبرانی اوسط میں اور ابن حبان صحیح میں ابن عمر رضی اللہ عنہما سے روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہ انے فرمایا :’’اللہ اور اس کے فرشتے سحری کھانے والوں پر درود بھیجتے ہیں ‘‘۔

میرے پیارے آقا ﷺ کے پیارے دیوانو !اس سے بڑھ کر کیا فضیلت ہو گی کہ سحری ہم کھائیں اور اللہ اوراس کے معصوم فرشتے سحری کھانے والوں پر درود بھیجیں۔

لہٰذا ضرور سحری کھانے کے لئے بیدار ہوا کریں۔ ایک اور مقام پر اُمّت پر کرم فرماتے ہوئے ارشاد فرمایا امام احمد ابوسعید خدری رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول ہاشمی علیہ التحیۃ والثنا ء ارشاد فرماتے ہیں: ’’سحری کل کی کل برکت ہے اسے نہ چھوڑنا اگر چہ ایک گھونٹ پانی ہی پی لے کیونکہ سحری کھانے والوں پر اللہ د اوراس کے فرشتے دورد بھیجتے ہیں ‘‘۔ (امام احمد)

میرے پیارے آقا ﷺ کے پیارے دیوانو !یہ سب برکتیں اس لئے بتائی جارہی ہیں تاکہ کسی بھی طرح امت سحری کے لئے بیدار ہواور تھوڑا سا پانی ہی سہی ضرور پی لے اگر ہم نے اس سنت پر عمل کیا تو ہم اللہ کی برکتوں اورمولیٰ کے رحمت کے حقدار ہوجائیںگے۔ ربّ قدیر ہم سب کے جانے انجانے میں ہوئے گناہ معاف فرمائے اور برکتوں سے نوازے۔

آمین بجاہ النبی الکریم علیہ افضل الصلوٰۃ والتسلیم