مگر۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ روزہ نہیں ٹوٹا

مسئلہ : بھول کر کھایا، پیا، جماع کیا روزہ نہ ٹوٹا۔ خواہ روزہ فرض ہو یا نفل۔ (بہار شریعت)

مسئلہ : مکھی، دھواں، غبار، حلق میں جانے سے روزہ نہیں ٹوٹتا۔ خواہ وہ غبار آٹے کا ہی کیوں نہ ہو جو چکی پیسنے سے اڑتا ہے۔ (بہار شریعت )

مسئلہ : تیل، سرمہ لگایا تو روزہ نہ ٹوٹااگر چہ تیل یا سرمے کا مزہ حلق میں محسوس ہوتا ہو۔ بلکہ تھوک میں سرمہ کا رنگ بھی دکھائی دیتا ہو تب بھی روزہ نہیں ٹوٹا۔

مسئلہ : احتلام ہو جانے، یا ہم بستری کرنے کے بعد غسل نہ کیا اور اسی حالت میں پورا دن گزار دیا تو وہ نمازوں کے چھوڑ دینے کے سبب سخت گنہ گار ہوگا مگر روزہ ادا ہو جائے گا۔ (انوار الحدیث)

مسئلہ : بوسہ لیا مگر انزال نہ ہوا تو روزہ نہیں ٹوٹا۔ (بہار شریعت )

مسئلہ : عورت کی طرف بلکہ اس کی شرمگاہ کی طرف نظر کی مگر ہاتھ نہ لگایا اور انزال ہو گیا یا بار بار جماع کے خیال سے انزال ہو گیاتو روزہ نہیں ٹوٹا۔ (بہار شریعت)

مسئلہ : تل یا تل کے برابر کوئی چیز چبائی اور تھوک کے ساتھ حلق سے اتر گئی تو روزہ نہ ٹوٹا مگر اس چیز کا مزہ حلق میں محسوس ہوتا ہو تو روزہ ٹوٹ جائے گا۔ (بہار شریعت)