أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

لِيَجۡزِىَ اللّٰهُ كُلَّ نَفۡسٍ مَّا كَسَبَتۡ‌ؕ اِنَّ اللّٰهَ سَرِيۡعُ الۡحِسَابِ‏ ۞

ترجمہ:

تاکہ اللہ ہر شخص کو اس کے کاموں کا بدلہ دے بیشک اللہ بہت جلد حساب لینے والا ہے۔

تفسیر:

اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے تاکہ ہر شخص کو اس کے کامو کا بدلہ دے بیشک اللہ بہت جلد حساب لینے والا ہے (ابراھیم : 51) 

امام واحدی نے کہا ہے کہ اس آیت میں ہر شخص سے مراد کفار ہیں کیونکہ سیاق کلام کفار کے متعلق ہے امام رازی نے فرمایا اس آیت کو اپنے عموم پر بر قرار رکھنا بھی جا ئز ہے یعنی مومنین اور پرہیز گار جو نیک عمل کریں گے ان کو اس کے بد لے میں اچھی جزا ملے گی اور کفار اور فساق کو ان کے کفر اور فسق کی سخت سزا ملے گی۔ 

اس سے لوگوں کو ڈرایا ہے تاکہ وہ برے کاموں سے باز آجائیں اور توبہ کرنے میں جلدی کریں کیا پتا کس وقت موت آجائے۔

تبیان القرآن – سورۃ نمبر 14 ابراهيم آیت نمبر 51