نیک عورت نیک مرد سے پہلے جنت میں

حضرت ابو امامہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے رحمت عالم ﷺ نے ارشاد فرمایا

یا معشر النسواں اما ان خیارکن یدخلن الجنۃ قبل خیار الرجال فالیغسلن و یطببن فیدفعن الیٰ ازواجھن علیٰ براذین الحمر والصفر معھن الولدان کانھن اللوٗلوٗ المنثور

اے عورتوں کی جماعت تم میں سے نیک نیک مردوں سے پہلے جنت میں داخل کی جائیں گی تو انہیں غسل دیا جائے گا خوشبو لگائی جائے گی،پھر لال پیلی سواریوں پر سوار کرکے انکے شوہروں کے حوالے کیا جائے گا پراگندہ موتیوں کی طرح انکے ساتھ بچے ہونگے 

(ابو الشیخ،کنز العمال ج ۱۶ ص ۴۱۲)

جنت کی تڑپ پیدا کرو

اس حدیث پاک میں نیک عورتوں کو یہ عظیم بشارت عطا کی گئی کہ ان کے نیک عملوں کی خدا کی بارگاہ میں بڑی وقعت ہے،انہیں آخرت میں انکے نیک شوہروں سے پہلے جنت میں پہنچایا جائے گا اور انہیں آراستہ کرکے بچوں کے ساتھ شوہروں کے استقبال کے لئے تیار رکھا جائے گا،جنت میں جانا بڑا شرف ہے اور شوہروں سے پہلے جنت میں جانا اس سے بڑی بشارت ہے،کیا ہماری مسلمان عورتوں میں اس بشارت کے قابل ہونے کا شوق پیدا ہوگا؟ دنیا کے پانچ پچاس کے حصول میں ہم کیا سے کیا کرتے ہیں،دنیا کے وقعت منصب کو پانے کے لئے ہم اپنے رات و دن کو ایک کر دیتے ہیں ،کیا جنت کو پانے کے لئے ہماری بہنوں میں یہ تڑپ پیدا ہوگی؟