دور جدید کا ہینڈ سم نوجوان بڑا سمجھ دار ، ایجو کیٹڈ اور فلاسفر کہلاتا ہے

یہ الگ بات ہے کہ یہ کان میں بالی، سر میں پونی اور جینز پھٹی لگاتا ہے

اسے سورج چاند کی رفتار کا نالج اور سیاروں کے خدوخال تک کی خبر ہے

یہ الگ بات ہے کہ ساتھ کمرے میں بستر پر پڑی ، درد سے کراہ رہی

ماں کی اور باہر برآمدے میں بخار سے تپتے باپ کی اسے خبر نہیں ہے

دراصل قصور اس ہینڈ سم نوجوان کا نہیں ہے بلکہ اس کے والدین کا ہے

الله الخالق نے تو والدین کو یہ بچہ دین فطرت پر ہی عطا فرمایا تھا

والدین نے مال اور دنیا کی ہوس میں سے دنیا دار اور لبرل بنایا ہے

یہی وجہ ہے کہ یہ بچہ کل بروز قیامت اللہ کے حضور شکایت کرے گا کہ

والدین نے اسے سائنس کی تعلیم تو دلوائی تھی، قرآن نہیں پڑھوایا تھا