سونا چاندی اور عذاب

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہنے ارشاد فرمایا جس کے پاس سونا اور چاندی ہو اور اس کی زکوٰۃ نہ دے تو قیامت کے دن ان کی تختیاں بنا کر جہنم کی آگ میں تپائیں گے پھر ان سے اس شخص کی پیشانی اور کروٹ داغی جائیں گی جب وہ تختیاں ٹھنڈی ہو جائیں گی پھر انہیں تپاکر داغیںگے قیامت کا دن پچاس ہزار برس کا ہے یوں ہی کرتے رہیں گے یہاں تک کہ تمام مخلوق کا حساب ہو جائے گا۔(مسلم شریف )

اور حضرت ابو ذر غفاری رضی اللہ عنہ سے روایت ہے، فرمایا کہ زکوٰۃ نکالے بغیر مال کو جمع کرنے والوں کو گرم پتھر کی بشارت سناؤ جس سے جہنم میں ان کو داغا جائے گا، اس کے سر پستان پر وہ گرم پتھر رکھیں گے، کہ سینہ توڑ کر شانہ سے نکل جائے گا اور شانہ پررکھیں گے کہ شانہ کی ہڈیاں توڑ کر سینہ سے نکل جائے گا۔ (مسلم شریف)

میرے پیارے آقا ﷺ کے پیارے دیوانو ! مال کی زکوٰۃ کی ادائیگی نہ کرنے کی سزا کتنی سخت ترین ہے۔ یہ بات ہمیں مذکورہ حدیث شریف سے سمجھ میں آتی ہے۔ ہم میں کا کون ہے جواتنا سخت عذاب برداشت کر سکے ؟ لہذا ہم کو چاہئیے کہ ہم اپنے مالوں کی زکوٰۃ ضرور ادا کریں اللہ عزو جل ہم کو زکوٰۃ کی ادائیگی کی توفیق عطا فرمائے۔

آمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْکَرِیْمِ عَلَیْہِ اَفْضَلُ الصَّلٰوۃِ وَ التَّسْلِیْمِ۔