اندھی تقلید کیا ہے ؟

٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

محترم قارئینِ کرام : نام نہاد اہلحدیث غیرمقلدین کہتے ہیں کہ حضرات ائمہ مجتہدین رحمہم اللہ کی تقلید اندھی تقلید ہے ، لہٰذا اسے چھوڑئیے اور ہمارے ساتھ مل جائیے ، محترم قارئینِ کرام ! ان نااہل نام نہاد اہلحدیث غیرمقلدین کی جہالت کی انتہاء دیکھئے ! انہیں تو اندھی تقلید کا معنیٰ تک نہیں معلوم ، اندھی تقلید اس کو کہتے ہیں کہ اندھا اندھے کے پیچھے چلے ، تو لازماً دونوں کسی کھائی میں گرجائیں ، گے اگر اندھا کسی آنکھوں والے کے پیچھے چلے تو آنکھ والا اپنی آنکھ کی برکت سے اپنے آپ کو بھی اور اس اندھے کو بھی ہر کھائی سے بچا کر لیجائے گا اور منزل تک پہنچادے گا ، حضرات ائمہ مجتہدین رحمہم اللہ معاذ اللہ اندھے نہیں ہیں ، عارف اور بصیر ہیں ، البتہ اندھی تقلید کا شکار وہ لوگ ہیں جو خود بھی اندھے ہیں اور ان کے پیشوا بھی اجتہاد کی آنکھ سے محروم ہیں ، رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلّم نے فرمایا : عن عبد اللہ بن عمرو رضی اللہ عنہما قال : قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلّم : ان اللہ لا یقبض العلم انتزاعا ینتزعہ من العباد، و لکن یقبض العلم بقبض لعلماء حتی اذا لم یبق عالما اتخذ الناس رؤوساجھالا فسئلوا بغیر علم فضلوا و اضلوا ۔

ترجمہ : جو جاہل کو دینی پیشوا بنائے تو وہ جاہل خود بھی گمراہ ہوگا اور اپنے ماننے والے کو بھی گمراہ کرے گا ۔ (مشکوٰۃ المصابیح جلد نمبر 1 صفحہ نمبر 33 عربی،چشتی)

یہ اندھی تقلید ہے ، اللہ تعالیٰ ہمیں پیغمبرِ معصوم صلی اللہ علیہ و آلہ وسلّم اور مجتہدِین ماجور رحمہم اللہ علیہم اجمعین کی تحقیق پر عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے اور فتنوں سے محفوظ فرمائے آمین ۔ (طالبِ دعا و دعا گو ڈاکٹر فیض احمد چشتی)