(۱۰) گمراہ اور گمراہ گر کی مجلس سے بچو

۷۷۔ عن عمران بن حصین رضی اللہ تعالیٰ عنہ قال ؛ قال رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم :مَنْ سَمِعَ بِالدَّجَّالِ فَلْیَنَأ عَنْہٗ ، فَوَاللّٰہِ اِنَّ الرَّجُلَ لَیَأتِیْہِ وَ ہُوَ یَحْسَبُ أنَّہٗ مُؤمِنٌ فَیَتْبَعُہٗ فَمَا یَبْعَثُ بِہ مِنَ الشُّبْہَاتِ۔

حضرت عمران بن حصین رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا : جو دجال کی خبر سنے اس پر واجب ہے کہ اس سے دور بھاگے ۔ کہ خدا کی قسم ! آدمی اسکے پا س جائے گا اور یہ خیال کرے گا کہ میں تو مسلمان ہوں ( یعنی مجھے اس سے کیا نقصان پہونچے گا ) وہاں اسکے دھوکوں میں پڑکر اسکا پیرو ہو جائے گا ۔

]۲[ امام احمد رضا محدث بریلوی قدس سرہ فرماتے ہیں

کیا دجال اسی ایک دجال اخبث کو سمجھتے ہو جو آ نے والا ہے؟ حاشا ! تمام گمراہوں کے داعی منادی سب دجال ہیں ،اور سب سے دور بھاگنے کا حکم فرمایا ،اور اس میں یہ ہی اندیشہ بتایا ہے ۔ فتاوی رضویہ جدید ۱/۷۸۲

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۷۷۔ السنن لابی داؤد ، الملاحم ، ۲/ ۵۹۳ ٭ المسند لاحمد بن حنبل ، ۴/۴۳۱

المستدرک للحاکم ، ۴/۵۳۱ ٭ الکنی و الاسماء للدولابی ، ۱/۱۷۰