أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

وَهُوَ الَّذِىۡۤ اَحۡيَاكُمۡ ثُمَّ يُمِيۡتُكُمۡ ثُمَّ يُحۡيِيۡكُمۡ‌ ؕ اِنَّ الۡاِنۡسَانَ لَـكَفُوۡرٌ‏ ۞

ترجمہ:

وہی ہے جس نے تمہیں زندہ کیا پھر وہ تمہیں موت دے گا پھر تم کو زندہ کرے گا۔ بیشک انسان بہت ناشکرا ہے

تفسیر:

اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے : وہی ہے جس نے تمہیں زندہ کیا پھر وہ تمہیں موت دے گا، پھر تم کو زندہ کرے گا، بیشک انسان بہت ناشکرا ہے۔ (الحج : ٦٦ )

یعنی جس نے تمہارے نفع کے لئے زمین کی تمام چیزوں کو تمہارے لئے مسخر کیا ہے اور تم پر انعام کیا ہے اسی کا تم پر یہ انعام ہے کہ اس نے پانی کی ایک بوند سے تم کو پہلی بار زندگی دی، پھر تم کو موت دی اور دوسری بار زندگی دے کر آخرت کی نعمتوں کا دروازہ تم پر کھول دیا، اللہ تعالیٰ نے تم پر اس قدر نعمتیں عطا فرمائی ہیں سو چو کہ تم اس کا کتنا شکر ادا کرتے ہو اور فرمایا کہ بیشک انسان بہت ناشکرا ہے کیونکہ انسانوں کی اکثریت اللہ تعالیٰ کا شکر ادا نہیں کرتی فرمایا :

وقلیل من عبادی الشکور (سبا : ١٣) اور میرے بندوں میں شکر ادا کرنے والے بہت کم ہیں۔

تبیان القرآن – سورۃ نمبر 22 الحج آیت نمبر 66