أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

اَمۡ لَمۡ يَعۡرِفُوۡا رَسُوۡلَهُمۡ فَهُمۡ لَهٗ مُنۡكِرُوۡنَ ۞

ترجمہ:

یا انہوں نے اپنے رسول کو پہچانا نہیں تو وہ اس کے مکر ہوگئے

(المئومنون : ٦٩ میں فرمایا انہوں نے اپنے رسول کو پہچانا نہیں تو وہ اس کے منر ہوگئے، یعنی وہ رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے صدق اور آپ کی دیانت اور آپ کے مکارم اخلاق سے ناواقف تھے اس لئے آپ کی نبوت کا انکار کرتے تھے سو یہ بات بھی غلط ہے، کیونکہ نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے دعویٰ نبوت سے پہلے وہ اچھی طرح جانتے تھے کہ نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) صادق اور امین ہیں اور جھوٹ اور برے اخلاق سے بہت دور ہیں تو جب وہ آپ کے صادق اور امین ہونے پر متفق تھے تو پھر کیوں آپ کی نبوت کا انکار کر رہے ہیں۔

القرآن – سورۃ نمبر 23 المؤمنون آیت نمبر 69