حدیث نمبر 418

روایت ہے حضرت مسروق سے ۱؎ فرماتے ہیں کہ میں نے حضرت عائشہ سے رسول اﷲ صلی اللہ علیہ وسلم کی رات کی نماز کے متعلق پوچھا تو آپ نے فرمایا کہ سات نو گیارہ رکعتیں تھیں ۲؎ سنت فجر کے علاوہ(بخاری)

شرح

۱؎ آپ مسروق ابن اجدع ہمدانی کو فی ہیں،حضور صلی اللہ علیہ وسلم کی وفات سے پہلے اسلام لائے مگر زیارت نہ کرسکے،لہذا تابعی ہیں،بچپن میں آپ کو چرالیا گیا تھا اس لیئے آپ کو مسروق کہتے ہیں،بڑے متقی عالم ہیں، ۲۶ھ؁ مقام کوفہ وفات ہوئی وہیں مزار ہے۔(اکمال)

۲؎ یعنی کبھی تہجد چار رکعت اور وتر تین رکعت پڑھتے تھے اور کبھی تہجد چھ رکعت اور وتر تین رکعت اور کبھی تہجد آٹھ رکعت اور وتر تین رکعت پڑھتے تھے آخری عمل زیادہ تھا،چونکہ تہجد کی نماز سرکار گھرمیں ادا کرتے تھے اس لیئے اس سے ازواج پاک خصوصا ً حضرت عائشہ صدیقہ زیادہ واقف تھیں اسی بناء پر آپ سے زیادہ پوچھا جاتا تھا۔