أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

تَاللّٰهِ اِنۡ كُنَّا لَفِىۡ ضَلٰلٍ مُّبِيۡنٍۙ‏ ۞

ترجمہ:

اللہ کی قسم بیشک ہم ضروری کھلئی ہوئی گمراہی میں تھے

اور بتوں کی پرستش کرنے والوں نے بتوں سے کہا بیشک ہم ضرور کھلی ہوئی گمراہی میں تھے جب ہم تمہاری عبادت کرتے تھے، اس طرح وہ بت پرستی پر اپنی ندامت کا اظہار اور بتوں کی عبادت کرنے میں اپنی رائے کی غلطی کا اعتراف کریں گے اور ہدایت کو اختیار نہ کرنے پر اپنی حسرت کا اظہار کریں گے اور اس دن بتوں سے اظہار برات کرنا اور ان کی مذمت کرنا ان کے لئے سود مند نہیں ہوگا، اللہ تعالیٰ فرمائے گا :

اور جب کہ تم ظلم کرچکے ہو تو یہ بات تم کو ہرگز نفع نہیں دے گی کہ تم سب عذاب میں مشترک ہو۔ (الزخرف :39)

القرآن – سورۃ نمبر 26 الشعراء آیت نمبر 97