أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

اَمَّنۡ يَّبۡدَؤُا الۡخَـلۡقَ ثُمَّ يُعِيۡدُهٗ وَمَنۡ يَّرۡزُقُكُمۡ مِّنَ السَّمَآءِ وَالۡاَرۡضِ‌ؕ ءَاِلٰـهٌ مَّعَ اللّٰهِ‌ؕ قُلۡ هَاتُوۡا بُرۡهَانَكُمۡ اِنۡ كُنۡتُمۡ صٰدِقِيۡنَ ۞

ترجمہ:

بتائو) وہ کون ہے جو ابتداء مخلوق کو پیدا کرتا ہے پھر اس کو دوبارہ پیدا کرے گا ‘ اور وہ کون ہے جو تم کو آسمان اور زمین سے رزق دیتا ہے ! کیا اللہ کے ساتھ کوئی اور معبود ہے ! آپ کہیے اگر تم سچے ہو تو تم اپنی دلیل لائو

مشرکین یہ مانتے تھے کہ سارے جہان کا خالق اور رازق اللہ تعالیٰ ہے لیکن وہ مرنے کے بعد دوبارہ پیدا کیے جانے کو نہیں مانتے تھے ‘ اللہ تعالیٰ ان پر حجت قائم فرماتا ہے کہ جس نے اس کائنات کو ابتداء پیدا کیا وہ اس کو دوبارہ کیوں نہیں پیدا کرسکتا ‘ سو اللہ تعالیٰ نے ہی ابتداء پیدا کیا اور وہی دوبارہ پیدا کرے گا ‘ وہی پیدا کرتا ہے اور وہی رزق دیتا ہے اور اگر تمہارا یہ دعویٰ ہے کہ اللہ تعالیٰ کے سوا کسی اور نے یہ سارا جہان پیدا کیا ہے ‘ یا اس کے سوا کسی اور نے کسی بھی چیز کو پیدا کیا ہے تو تم اس پر دلیل لائو اور اگر تمہارا یہ دعویٰ ہے کہ اللہ تعالیٰ نے کسی اور کے ساتھ مل کر یا اس کے تعاون سے اس کائنات کو پیدا کیا ہے تو تم اس پر دلیل قائم کرو۔

القرآن – سورۃ نمبر 27 النمل آیت نمبر 64