أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

وَوَقَعَ الۡقَوۡلُ عَلَيۡهِمۡ بِمَا ظَلَمُوۡا فَهُمۡ لَا يَنۡطِقُوۡنَ‏ ۞

ترجمہ:

اور ان کے ظلم کرنے کی وجہ سے ان پر قول ( عذاب) واقع ہوچکا ‘ سو اب وہ کچھ نہیں بولیں گے

تفسیر:

اور جب ان کے ظلم کرنے کی وجہ سے یعنی ان کے شرک کرنے کی وجہ سے ان پر عذاب واقع ہوجائے گا تو وہ کوئی بات نہیں کرسکیں گے ‘ کیونکہ ان کے پاس اپنے شرک اور دیگر برے اعمال پر کوئی عذر ہوگا نہ کوئی دلیل ہوگی ‘ اور اکثر مفسرین نے یہ کہا ہے کہ ان کے مونہوں پر مہر لگادی جائے گی اس لیے وہ کوئی بات نہیں کرسکیں گے۔

تبیان القرآن – سورۃ نمبر 27 النمل آیت نمبر 85