حدیث نمبر 528

روایت ہے حضرت ابو مالک اشعی ۱؎ سے فرماتے ہیں کہ میں نے اپنے والد سے کہا ابا جان آپ نے تو رسول اﷲ صلی اللہ علیہ وسلم ابوبکر،عمر،عثمان،اور علی کے پیچھے اور یہاں کوفے میں حضرت علی کے پیچھے قریبًا پانچ سال ۲؎ نمازیں پڑھیں ہیں کیا یہ لوگ قنوت پڑھتے تھے فرمایا بیٹے یہ بدعت ہے۳؎(ترمذی،نسائی،ابن ماجہ)

شرح

۱؎ آپ کا نام سعد ابن طارق ابن اشیم ہے،خود تابعی ہیں والدصحابی ہیں۔

۲؎ یعنی چار سال کچھ مہینے آپ کی خلافت کے بقدر۔

۳؎ یہ حدیث حنفیوں کی قوی دلیل ہے یعنی ہمیشہ قنوت نازلہ کسی نماز میں پڑھنا بدعت سیئہ ہے،نہ حضور انورصلی اللہ علیہ وسلم کا عمل نہ کسی صحابی کا۔خیال رہے کہ یہاں ہمیشہ قنوت نازلہ پڑھنا مراد ہے ورنہ علی مرتضٰی نے جنگ صفین کے موقعہ پرقنوت نازلہ پڑھی ہے۔