حدیث نمبر 541

روایت ہے حضرت ابو موسیٰ اشعری سے وہ رسول اﷲ صلی اللہ علیہ وسلم سے راوی کہ آپ نے فرمایا اﷲ تعالٰی پندرھویں شعبان کی شب میں توجہ کرم فرماتا ہے تو کافر یا کینہ والے کے سوا اپنی سب مخلوق کو بخش دیتا ہے۔(ابن ماجہ)اور احمد نے عبداﷲ ابن عمرو ابن عاص سے روایت کی اور ان کی روایت میں ہے دو کے سوا کینہ پرور اور قاتل نفس ۱؎

شرح

۱؎ کینہ سے مراد دنیوی کینے اور عداوتیں ہیں اور قتل سے مراد ظلمًا قتل ہے،ورنہ کفار سے کینہ رکھنا اور جہاد میں کفار کا قتل،ڈاکو،زانی اور قاتلِ نفس کا قتل عبادت ہے۔بعض جگہ شب برات کے دن ایک دوسرے کو حلوے وغیرہ کے تحفے بھیجتے ہیں اپنے قصوروں کی آپس میں معافی چاہ لیتے ہیں،ان سب کی اصل یہ حدیث ہے کہ عداوت و کینہ والا اس رات کی رحمتوں سے محروم ہے اور یہ تحفہ کینے دفع کرنے کا ذریعہ ہے،نیز یہ رات عبادتوں کی اور خیرات ہدایا وغیرہ بھی عبادت ہیں،ان خیراتوں کو روکنا اور شرک کہنا بڑی جہالت۔