حدیث نمبر 551

روایت ہے حضرت عائشہ سے کہ آپ چاشت کی آٹھ رکعتیں پڑھتی تھیں پھر فرماتیں کہ اگر میرے ماں باپ اٹھا بھی دیئے جائیں تو میں یہ رکعتیں نہ چھوڑوں ۱؎(مالک)

شرح

۱؎ یعنی اگر اشراق کے وقت مجھے خبر ملے کہ میرے والدین زندہ ہوکر آگئے ہیں تو میں ان کی ملاقات کےلیئے یہ نفل نہ چھوڑوں بلکہ پہلے یہ نفل پڑھوں پھر ا ن کی قدم بوسی کروں۔اس کی اوربھی شرحیں کی گئی ہیں مگر یہ زیادہ مناسب ہے۔