عذاب سے نجات کا ذریعہ

حضرت معاذ بن جبل رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں کہ ابن آدم کا کوئی عمل ایسا نہیں جو اس کو عذاب الٰہی سے نجات دلادے سوائے ذکر الٰہی کے۔ (مالک، ترمذی، ابن ماجہ)

میرے پیارے آقا ﷺ کے پیارے دیوانو!ایمان کی پختگی کے ساتھ ہمیں اللہ عزوجل کا ذکر کرنا چاہئے اسلئے کہ اعمال کی قبولیت کا دارومدار ایمان پرہے اور ایمان کے ساتھ اللہ عزوجل کا ذکر نجات کا ذریعہ ہے۔ مذکورہ حدیث شریف میں مطلق نجات کا ذریعہ اللہ عزوجل کا ذکر فرمایا گیاہے یعنی دنیا وآخرت کی تکلیفوں سے اگر نجات چاہئے تو اللہ عزوجل کا ذکر کرنا چاہئے۔ اللہ عزوجل ہم سب کو ذکر الٰہی کی بدولت دنیا وآخرت کی تکلیفوںسے نجات عطا فرمائے۔ آمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْکَرِیْمِ عَلَیْہِ اَفْضَلُ الصَّلٰوۃِ وَ التَّسْلِیْمِ