وضو کا طریقہ}

سب سے پہلے بِسْمِ اللّٰہِ وَالْحَمْدُ لِلّٰہ پڑھیں علماء فرماتے ہیں کہ وضو سے پہلے ان کلمات کو پڑھنے سے جب تک وضو رہے گا فرشتے اس کے نامۂ اعمال میں نیکیاں لکھتے رہیں گے۔

اب دونوں ہاتھوں کو دھولیں، ہاتھوں کو دھونے کے بعد کُلِّی کریں کُلّی کرنے میں یہ احتیاط کریں کہ دانتوں میں چھالیہ وغیرہ پھنسی ہوئی ہوتو اُسے نکال دیں اچھی طرح کُلّی کریں کہ پورے منہ میں کوئی حصّہ خشک نہ رہ جائے ۔ مسواک بھی کریں مسواک پر مفصّل کلام آگے ہوگا۔

اس کے بعد ناک میں پانی چڑھایا جائے ناک کی نرم ہڈی تک پانی چڑھایا جائے اس کے بعد چُھنگلی انگلی سے سیدھی طرف کا نتھنا پھر اُلٹی طرف کا نتھنا صاف کیا جائے اس طریقے سے ناک میں تین مرتبہ پانی چڑھایا جائے یہ سنّت ہے ۔

اب چہرہ دھونا ہے چہرہ کی تعریف یہ ہے کہ بالوں کی جڑ یعنی پیشانی جہاں سے عموماً بال جمنا شروع ہوتے ہیں وہاں سے لے کر ٹھوڑی تک اورایک کان کی لو سے دوسرے کان کی لَو تک کا علاقہ وضو میں دھونا فر ض ہے طریقہ یہ ہے کہ ہاتھوں سے چہرے پر پانی اس طرح ڈالا جائے کہ پانی پورے چہرے پر بہہ جائے اب یہ خیال رکھیں کہ چہرے کی سائیڈ وں پر جہاں جگہ سوکھی رہ گئی ہے وہاں ایک چُلّو پانی ہاتھوں میں لے کر دائیں اوربائیں طرف ڈال دیا جائے تاکہ بال برابر بھی جگہ سوکھی نہ رہے اس طریقے سے چہرہ دھونا ایک مرتبہ دھونا کہلائے گا جب تک پورا چہرہ نہیں دُھلے گا اس وقت تک یہ دُھلنے میں شمار نہ ہوگا۔ جن حضرات کی ماشاء اللہ داڑھی ہے تووہ خاص اہتما م کریں کہ داڑھی میں پانی ڈال کر اس کا خلال کریں تاکہ اندر تک چہرے کی جڑ تک پانی بہہ جائے یہ سنّت ہے ۔

اب دونوں ہاتھوں کو کہنیوں سمیت دھونا ہے سب سے پہلے آپ ہاتھ میں پانی لے کر دونوں ہاتھوں پر چپڑ لیں تاکہ دونوں ہاتھ گیلے اورتر ہوجائیں اس کے بعد نل کے نیچے سے دونوں ہاتھ گزاریں پہلے سیدھا ہاتھ پھر اُلٹا ہاتھ یہ عمل تین مرتبہ کریں ہاتھوں کو کہنیوں تک نہیں بلکہ کہنیوں سمیت دھوئیں کہ بال برابر بھی جگہ سوکھی نہ رہے ۔

اَب سر کا مسح کرنا ہے حضرت امام اعظم ابو حنیفہ علیہ الرحمہ کا مذہب یہ ہے کہ چوتھائی سر کا مسح کرنا فرض ہے یعنی ہاتھ گیلا کر کے سر پر پھیر دیا جائے تو مَسح ہوجائے گا۔

لیکن سُنّت طریقہ یہ ہے کہ ہاتھوں کو گیلا کیا جائے، گیلا کرنے کے بعد دونوں ہاتھوں کی چھوٹی انگلی اس کے برابر پھر اس کے برابر والی اُنگلی یعنی تین انگلیاں آپس میں ساتھ ملا کر دونوں ہاتھوں کی انگلیوں کو جہاں سے بال جمتے ہیں وہاں سے لے کر پیچھے لے جائیں اس کے بعد ہتھیلیاں آپ کی گیلی ہیں یہ گیلی ہتھیلیاں پیچھے سے آگے لائیں تاکہ ہتھیلیوں میں جو تَری ہے وہ بالوں میں لگ جائے اس کے بعد دونوں انگلیاں انگوٹھا اوراس کے ساتھ والی انگلی دونوں کانوں کے اندر ڈال کر گُھمائیں اس کے بعد ہاتھوں کی پُشت گیلی رہ گئی اس سے گردن کے پیچھے مسح کریں اس طرح پورے سر کا مسح ہوگیا، پورے سرکا مسح سرکارِ اعظم ﷺکی سُنّت ہے ۔

اب دونوں پیروں کو ٹخنوں سمیت دھونا ہے ،پیر دھوتے وقت انگلیوں کا خلال کریں ہاتھ کی چھوٹی انگلی کو گیلا کر کے دیگر انگلیوں میں گھمائیں پھر دوسرے پیر میں بھی اس طرح کریں پہلے سیدھاپاؤں دھوئیں پھر اُلٹا دھوئیں پیر کو نل کے نیچے سے گُزاریں تاکہ کوئی جگہ بھی بال برابر سوکھی نہ رہ جائے ۔

وضو کرنے کے بعد آسمان کی طرف دیکھ کر شہادت کی اُنگلی اُٹھا کر کلمہ شہادت پڑھیں۔