حدیث نمبر 581

روایت ہے حضرت مالک سے انہیں خبرپہنچی کہ حضرت ابن عباس اس قدر مسافت میں نماز قصر کرتے تھے جو مکہ اور طائف،مکہ اورعسفان اور مکہ اور جدے کے درمیان ہے ۱؎ امام مالک فرماتے ہیں کہ یہ مسافت چار برید ہے ۲؎(مؤطا)

شرح

۱؎ یعنی اس سے کم مسافت میں قصر نہ کرتے تھے۔معلوم ہوا کہ سفرکے لیئے سفر کی حد مقرر ہے فقط گھر سے نکل جانے پر سفر نہیں ہوجاتا جیسا بعض عقلمندوں نے سمجھا۔خیال رہے کہ عسفان مکہ معظمہ سے مدینہ کی راہ پر دو منزل ہے اور جدہ بڑا شہر ہے مکہ معظمہ سے تقریبًا ۶۵ میل ہے،یہ فقط تشبیہ ہے تعیین نہیں۔

۲؎ ایک برید چار کوس کا ہے لہذا چار برید سولہ کوس ہوئے اور عرب کا ایک کوس تین میل عربی ہے،لہذا سولہ کوس۴۸میل عربی ہوئے،ایک میل چھ ہزارگز کا ایک گزچوبیس انگل کا۔(لمعات)اعلیٰ حضرت رحمۃ اﷲ علیہ کی تحقیق یہ ہے کہ انگریزی میل سے یہ مسافت ۵۷ میل بنتی ہے۔