(۷) تقدیر کا منکر ملعون ہے

۱۳۸۔ عن اُم المؤمنین عائشۃ الصدیقۃ رضی اللہ تعالی عنہا قالت : قال رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم : سِتَّۃٌ لَعَنْتُہُمْ وَ لَعَنَہُمُ اللّٰہُ وَ کُلُّ نَبِیٍّ مُجَابٌ، ألزَّائِدُ فِی کِتَابِ اللّٰہِ ، وَ الْمُکَذِّبُ بِقَدْرِ اللّٰہِ ،وَ الْمُتَسَلِّطُ بِالْجَبْرُوْتِ فَیُعِزُّ بِذٰلِکَ مَنْ أذَلَّ اللّٰہُ وَ یُذِلُّ مَنْ أعَزَّ اللّٰہُ، وَ الْمُسْتَحِلُّ لِحَرَمِ اللّٰہِ ، وَ الْمُسْتَحِلُّ مِنْ عِتْرَتِی مَا حَرَّمَ اللّٰہُ ، وَ التَّارِکُ لِسُنَّتِی ۔ شمائم العنبر ص ۱۴

ام المؤمنین حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ تعالی عنہا سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: چھہ لوگوں پر میری لعنت کہ اللہ تعالی نے ان پرلعنت فرمائی اور ہر نبی کی دعا قبو ل ہوتی ہے ۔ اللہ تعالی کی کتاب میں اپنی رائے سے بڑھانے والا، تقدیر کو جھٹلانے والا، اپنی طاقت وقوت کے بل بوتے پر ذلیلوں کو معزز رکھنے والا ،شریفوں کوذلیل کر نے والا ،اللہ تعالیٰ کی محرمات کو حلال سمجھنے والا ، میرے اہلبیت کے بارے میں جن چیزوں کو اللہ تعالی نے حرام کیا ان کو حلال سمجھنے والا ، اور میری سنت مؤکد ہ کو ہلکا سمجھ کر چھوڑنے والا ۔ ۱۲م

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۱۳۸۔ مجمع الزوائد للہیثمی، ۱/۱۷۶ ٭ الجامع الصغیرللسیوطی ، ۲۸۶