(۲ ) جھوٹی گواہی گناہ کبیرہ ہے

۱۴۰ ۔ عن خریم بن فاتک الأسدی قال: صلی النبی صلی اللہ تعالی علیہ وسلم الصبح فلما اانصرف قام قائما فقال: عُدِلَتْ شَہَادَۃُ الزُّوْرِ بِالْاِشْرَاکِ بِاللّٰہِ ثَلاثَ مَرَّاتٍ ثُمَّ تَلاَ ہٰذِہٖ الْآیَۃِ وَاجْتَنِبُوْا قَوْلَ الزُّوْرِ حُنَفَآئَ لِلّٰہِ غَیْرَ مُشْرِکِیْنَ بہٖ۔ فتاویٰ رضویہ ۵/۱۳۴

حضرت خریم بن فاتک اسدی رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ حضور نبی کریم صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نے ایک دن صبح کی نماز پڑھائی ۔جب فارغ ہوئے تو تشریف فرما ہو کر ارشاد فرمایا : جھوٹی گواہی شرک کے برابر ہے ۔ یہ جملہ تین بار ارشاد فرمایا۔ پھر یہ آیت مبارکہ تلاوت فرمائی، جھوٹے قول سے دور رہو اللہ تعالیٰ کی فرمانبرداری کرتے ہوئے اسکا کسی کو شریک نہ ٹھہراتے ہوئے ۔۱۲م

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۱۳۹۔ تاریخ دمشق لا بن عساکر، ۲/۲۰۹ ٭ اتحاف الساد ۃ للزبیدی ، ۸/۵۷۰

کشف الخفا للعجلونی، ۲/ ۵۰۸ ٭ الدرراالمنتثرۃ للسیوطی، ۱۸۰

۱۴۰۔ السنن لا بن ماجۃ ، الشہادۃ ۱/ ۱۷۳ ٭ الترغیب والترھیب للمنذری، ۳/۱۲۱