نماز میں ہاتھ ناف کے نیچے باندھنا سنت ہے

٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

محترم قارٸینِ کرام احادیثِ مبارکہ میں ہے : عن علی رضی الله عنه قال ان من السنة فی الصلة وضع الأکف علی الأکف تحت السرة.

ترجمہ : حضرت علی رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ نماز میں سنت یہ ہے کہ ہتھیلیوں کو ہتھیلیوں پر ناف کے نیچے رکھا جائے۔(أحمد بن حنبل، المسند، 1 : 110، رقم : 875، مؤسسة قرطبة مصر)

عن أبی جحيفة ان علي رضی الله عنه قال السنة وضع الکف علی الکف فی الصلة تحت السرة.

ترجمہ : ابو جحیفۃ سے روایت ہے کہ حضرت علی رضی اللہ عنہ نے فرمایا نماز میں ایک ہتھیلی کا دوسری پر ناف کے نیچے رکھنا سنت ہے۔(أبو داؤد، السنن، 1 : 201، رقم : 756، دار الفکر۔چشتی)

عن علی أنه کان يقول ان من سنة الصلة وضع اليمين علی الشمال تحت السرة.

ترجمہ : حضرت علی رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نماز میں دایاں ہاتھ بائیں ہاتھ پر ناف کے نیچے رکھنا سنت ہے’۔(دار قطنی، السنن، 1 : 286، رقم : 10، دار المعرفة بيروت

بيهقی، السنن الکبری، 2 : 31، رقم : 2171، مکتبة دار الباز مکة المکرمة۔چشتی)

عن ابرهيم قال يضع يمينه علی شماله فی الصلة تحت السرة.

ترجمہ : حضرت ابراہیم فرماتے ہیں کہ نماز میں دایاں ہاتھ بائیں ہاتھ کے اوپر ناف کے نیچے رکھے۔(أن أبی شيبه، المصنف، 1 : 343، رقم : 3939، مکتبة الرشيد الرياض۔چشتی)

عن علی قال من سنة الصلاة وضع لأيدی علی الأيدی تحت السرر.

ترجمہ : حضرت علی رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ نماز میں ہاتھوں پر ہاتھ نافوں کے نیچے رکھنا سنت ہے ۔ (ابن ابی شيبه، المصنف، 1: 343، رقم : 3945)۔(طالبِ دعا و دعا گو ڈاکٹر فیض احمد چشتی)