امام احمد رضا خان کا مقصد زندگی دفاع عزت رسول ۔۔۔!!

الحمدﷲ! اس فقیر بارگاہ غالب قدیر عز جلالہ،کے دل میں کسی شخص سے نہ ذاتی مخالفت نہ دنیوی خصومت،مجھے میرے سرکار ابد قرار حضور پرنور سید الابرار صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم نے محض اپنے کرم سے اس خدمت پر مامور فرمایاہے کہ اپنے مسلمان بھائیوں کوایسوں کے حال سے خبردار رکھوں جو مسلمان کہلاکر اﷲ واحد قہار جل جلالہ اور محمد رسول اﷲ ماذون مختار صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم کی شان اقدس پر حملہ کریں تاکہ میرے عوام بھائی مصطفی صلی اﷲ علیہ وسلم کی بھولی بھالی بھیڑیں ان”ذیاب فی ثیاب” انسانی لباس میں چھپے بھیڑئیوں سےبچے رہیں

،یہ مبارك کام بحمداللہ اس عاجز کی طاقت سے بدرجہا زیادہ انجام پایا ،اور ہوتاہے،اورجب تك وہ چاہے گا ہوگا

اس سے زیادہ نہ کچھ مقصود نہ کسی کی گالی گلوچ وبہتان وافتراء کی پرواہ

الحمد للہ! یہ زبانی دعوی نہیں میری تمام کاروائیاں اس پر شاہد عدل ہیں،موافق اور مخالف سب دیکھ رہے ہیں کہ دین کے معاملے کے علاوہ جتنے ذاتی حملے مجھ پر ہوئے کسی کی اصلًا پرواہ نہ کی،

ان شاء اﷲ العزیز ذاتی حملوں پر کھبی التفات نہ ہوگا۔سرکار صلی اللہ علیہ وسلم سے مجھے یہ خدمت سپرد ہے کہ عزت سرکار کی حمایت کروں نہ کہ اپنی۔

میں تو خوش ہوں کہ جتنی دیر مجھے گالیاں دیتے،افتراء کرتے،براکہتے ہیں اتنی دیر محمد رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم کی بدگوئی،اور تنقیص سے غافل رہتے ہیں

میری آنکھ کی ٹھنڈك اس میں ہے کہ میری اور میرے آباء کرام کی آبروئیں عزت محمدرسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم کے لئے سپرر ہیں، اللھم اٰمین!

فتاوی رضویہ ١٥/٨٨

✍ #محمدساجدمدنی

MatureediResearchCenter_Malegaon