غیرمقلد وہابی حضرات کے مولوی تعویذ دیتے ہیں اور اُن سے پیسہ کمانے کا دھندا کرتے ہیں

٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

محترم قارئینِ کرام : آج کل کے غیرمقلد نام نہاد اہلحدیث حضرات کے عوام اور ان کے علماء کو تعویذ اور تمیمہ میں کوئی بھی فرق معلوم نہیں اس لیئے ان کے نزدیک تعویذ مطلقاً شرک اور حرام ہے اور یہ کسی سے ڈھکی چھپی بات نہیں مگر ان کے بڑے اسے جائز کہتے ہیں ، تعویذ دیتے ہیں اور اُن سے پیسہ کماتے ہیں پڑھیئے حوالہ اصل اسکن کے ساتھ ۔

مشہور غیرمقلد وہابی مولوی اور وہابیوں کے مؤرخِ عظیم جناب مولوی اسحاق بھٹی صاحب لکھتے ہیں : مولوی معین الدین لکھوی تعویذات دیتے عاشقوں کا ہجوم ہوتا اور بہت پیسہ کماتے تھے ۔ (بزم ارجمنداں صفحہ نمبر 460 ، 461 اسحاق بھٹی وہابی)

ہمارا سوال : غیرمقلدین جو تعویذ و دم کو شرک کہتے ہیں اُن سے یہ ہے کہ آپ کے مولوی معین الدین لکھوی اور کتاب لکھنے والے مورخ غیرمقلدین جناب اسحاق بھٹی اور تعویذ لینے والے وہابی حضرات یہ سب مشرک ہوئے کہ نہیں ؟ اگر نہیں تو کیوں ؟ اگر مشرک ہوئے تو کسی غیرمقلد وہابی نے آج تک ان پر فتوائے شرک دیا ہو تو ثبوت دیجیئے ؟

یا تمہارا نام نہاد جُوشِ توحید اور فتوے بازی صرف مسلمانانِ اہلسنّت پر فتوے لگا کر فتنہ و فساد اور تفرقہ پھیلانے کےلیئے ہے ؟

غیرمقلد وہابیوں کے مولوی صوفی عبداللہ صاحب دم کرتے تعویذ لکھ کر دیتے اور کہتے پہن لو یا باندھ لو شِفاء ہوگی اور شِفاء مل جاتی اور اپنی بات اللہ سے منوا لیتے ۔ (صُوفی عبد اللہ صفحہ نمبر 404۔چشتی)

ہمارا سوال : غیرمقلدین جو تعویذ و دم کو شرک کہتے ہیں اُن سے یہ ہے کہ آپ کے مولوی صوفی عبد اللہ اور کتاب لکھنے والے مورخ غیرمقلدین جناب اسحاق بھٹی صاحبان یہ سب مشرک ہوئے کہ نہیں ؟ اگر نہیں تو کیوں ؟ اگر مشرک ہوئے تو کسی غیرمقلد وہابی نے آج تک ان پر فتوائے شرک دیا ہو تو ثبوت دیجیئے ؟

یا تمہارا نام نہاد جُوشِ توحید اور فتوے بازی صرف مسلمانانِ اہلسنّت پر فتوے لگا کر فتنہ و فساد اور تفرقہ پھیلانے کےلیئے ہے ؟ ۔ (طالبِ دعا و دعا گو ڈاکٹر فیض احمد چشتی)