افضل کلمات

حضرت سمرہ بن جند ب رضی اللہ عنہما سے روایت ہے فرماتے ہیں کہ تاجدار کائنات ﷺ نے فرمایا ’’افضل کلمات چار ہیں سُبْحَانَ اللّٰہِ، اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ، لاَاِلٰہَ اِلَّااللّٰہُ اور اَللّٰہُ اَکْبَرُ‘‘۔ اور ایک روایت میں یوں ہے کہ اللہ عزوجل کوچار کلمات پیارے ہیں۔ سُبْحَانَ اللّٰہِ،اَلْحَمْدُلِلّٰہِ، لاَاِلٰہَ اِلَّااللّٰہُ اور اَللّٰہُ اَکْبَرُ ان میں کسی کلمہ سے بھی شروع کر سکتے ہیں۔ (مسلم شریف)

میرے پیارے آقاﷺ کے پیارے دیوانو!تسبیح کے معنٰی ہیں اللہ عزوجل کو تمام عیوب و نقصان سے پاک جاننا۔ یا پاک بیان کرنا۔ اسمائے الٰہی ورد کرنے والے پر اس نام کی تجلی وارد ہوتی ہے تو’’ سُبْحَانَ اللّٰہِ‘‘کا ورد کرے تو انشاء اللہ خود یہ بندہ برائیوں سے پاک ہوتا چلا جائے گا تسبیح بہت اعلیٰ ذکر ہے۔ اسی لئے نماز شروع کرتے ہیں۔ ’’سُبْحَانَکَ اللّٰھُمَّ‘‘سے، رکوع میں ’’سُبْحَانَ رَبِّیَ الْعَظِیْمِ‘‘سجدہ میں ’’سُبْحَانَ رَبِّیَ الْاَعْلٰی اور تعجب خیزبات پر ’’سُبْحَانَ اللّٰہِ‘‘کہتے ہیں۔

میرے پیارے آقا ﷺ نے مذکورہ چار کلمات کو افضل فرمایا کیوں کہ ان کلمات میں اللہ عزوجل کی بے شمار تعریفیں مذکور ہے سُبْحَانَ اللّٰہِ‘‘ کا معنٰی ہے اللہ عزوجل سارے عیوب سے پاک ہے۔ ’’اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ‘‘ کا معنٰی ہے تمام تعریفیں اللہ عزوجل کے لئے ہیں جو تمام صفات کمالیہ کا جامع ہے۔ ’’لاَاِلٰہَ اِلَّااللّٰہُ‘‘ وہ کلمہ ہے جسے پڑھ کر بندہ مسلمان ہوتا ہے۔ ’’اَللّٰہُ اَکْبَرُ‘‘اللہ عزوجل سب سے بڑا ہے گویا ’’اَللّٰہُ اَکْبَرُ‘‘ کہنے والا بندہ اللہ تعالیٰ کی کبریائی اور ہر ایک سے اس کی بڑائی کا اعتراف کرتا ہے یہ کلمات اللہ عزوجل کی جامع صفات ہیں۔

اللہ عزوجل سرکار ﷺ کے صدقہ وطفیل ہم سب کو ان افضل کلمات کے ورد کی توفیق نصیب فرمائے۔ آمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْکَرِیْمِ عَلَیْہِ اَفْضَلُ الصَّلٰوۃِ وَ التَّسْلِیْمِ