رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا وصالِ ظاہری ہوچکا تھا ،

خلیفہ کون ہوگا؟؟؟

مشورہ جاری تھا۔۔۔۔۔۔ سیدنا ابوبکر صدیق رضی اللہ عنہ

کا فرمان تھا کہ خلیفہ ، حضرت علی کرم اللہ وجہہ الکریم

ہونگے کہ وہ خلافت و امارت کی صلاحیت رکھتے ہیں۔۔

یہ سن کر مولا علی رضی اللہ نے تلوار سونت لی !!

اور گرجدار آواز میں فرمایا !

قُم یا خلیفہ رسول اللہ ! صلی اللہ علیہ وسلم

اے خلیفہ رسول اٹھئیے ! جب رسول اللہ صلی اللہ علیہ

وسلم نے آپکو نماز کے واسطے آگے کیا پھر کون ہے جو

آپ کو پیچھے کرے؟

صدیق اکبر نے فرمایا ! اے علی آپ امیر ہیں

سیدنا علی نے فرمایا ! آپ امیر ہیں

تمہید ابو الشکور سالمی ص 352

المختصر سیدنا علی نے آپ کو راضی کر ہی لیا اور بیعت

منعقد ہوگئ

سیدنا صدیق اکبر کو ” پہلا نمبر ” دینے والے مولا علی

ہی ہیں !!!

جو نہ مانے وہ اسے بھی ایک نمبر دینا چائیے وہ ہے

” 420″۔۔۔۔۔۔۔۔

ابنِ حجر

5/2/2021ء