(۱۳) مومن کو ہر چیز پر اجر ملتا ہے

۲۲۱۔ عن أبی ہریرۃ رضی اللہ تعالیٰ عنہ قال: قال رسول اللہ صلی اللہ تعالی علیہ وسلم : کُلُّ سُلاَمیٰ مِنَ النَّاسِ عَلَیْہِ صَدَقَۃٌ ، کُلَّ یَوْمٍ تَطْلَعُ فِیْہِ الشَّمْسُ تَعْدِلُ بَیْنَ الْاِثْنَیْنِ صَدَقَۃٌ بَیْنَہُمَا ،وَتُعِیْنُ الرَّجُلَ عَلیٰ دَابَّتِہٖ فَتَحْمِلُ عَلَیْہَا اَوْتَرْ فَعُ لہٗ عَلَیْہَا مَتَاعَہٗ صَدَقَۃٌ ، وَالْکَلِمَۃُ الطَّیِّبَۃُ صَدَقَۃٌ ،وَدَلُّ الطَّرِیْقِ صَدَقَۃٌ ،وَتَمِیْطُ الْأذیٰ عَنِ الطَّرِیْقِ صَدَقَۃٌ۔

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا : آدمی پر جسمانی جو ڑوں کے برابر صدقہ کرنا واجب ہے ۔ تو ہر دن دو آدمیوں کے درمیان صلح کرانا بھی صدقہ ہے ۔ کسی کی مدد کرکے اسکو سواری پر سوار کرنا بھی صدقہ ہے ۔ سواری پرکسی کاسامان لدوادینا بھی صدقہ ہے ۔ اچھی بات کہنا بھی صدقہ ہے۔ راستہ بتانا صدقہ ہے ۔ راستہ سے تکلیف دہ چیز ہٹانا بھی صدقہ ہے ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۲۱۔ الجامع الصحیح للبخاری ، الجہاد ، ۱/ ۴۱۹ ٭ الصحیح لمسلم ، الزکوۃ ، ۱/ ۳۲۵

المسند لا حمد بن حنبل ، ۲/ ۳۱۲ ٭ السنن الکبری للبیہقی ، ۴/۱۸۸

شرح السنۃ ،للبغوی ، ۶/ ۱۴۵ ٭ الدر المنثور للسیوطی ، ۱/۲۱۰