سرکارِ اعظم ﷺکے بال مبارک کیسے تھے }

سرکارِ اعظم ﷺکے موئے مبارک کبھی آدھے کان تک کبھی کان کی لَو تک ہوتے اورجب بڑھ جاتے تو شانۂ مبارک تک چُھو جاتے سرکارِ اعظم ﷺبیچ سر میںمانگ نکالتے ۔

مسئلہ : مر د کو یہ جائز نہیں کہ وہ عورتوں کی طرح بال بڑھائے بعض صوفی بننے والے لمبی لمبی لٹیں بڑھالیتے ہیں جوان کے سینہ پر سانپ کی طرح لہراتی ہیں اوربعض چوٹیاں یا جُوڑے بنالیتے ہیں یہ سب کام ناجائزاورخلافِ شرع ہیں۔

مسئلہ : عورتوں کے سر کے بال کٹوانا ناجائز اور گناہ ہے شوہر اگر اس طرح کرنے کو کہے جب بھی یہی حکم ہے کہ عورت ایسا نہ کرے ورنہ گنہگار ہوگی کیونکہ شریعت کی نافرمانی کرنے میںکسی کا کہنا نہیںمانا جائے گا۔ (درمختار)

بخاری شریف میں ہے ’’لَا طَاعَۃَ فِیْ مَعْصِیَۃِ اللّٰہِ ‘‘ یعنی اللہ کی معصیت میں کسی کی اطاعت نہیں۔

بعض عورتیں بے بی کٹ بال رکھتی ہیں یہ بھی یہود ونصاریٰ کا طریقہ ہے ۔