حضرت ابو عامر حمصی رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ حضرت ثوبان رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے تھے کہ جو بھی دو آدمی تین دن سے زیادہ قطع تعلق رکھیں پھر ان میں سے ایک مرجائے یا دونوں اسی حالت ( باہم ناراضگی کی حالت) میں مر جائیں تو دونوں ہلا ک ہوںگے پھر فرمایا جو بھی کوئی پڑوسی اپنے پڑوسی پر ظلم اور زیادتی کرے گا یہاں تک کہ اسے اپنے گھر سے نکل جانے پرمجبور کردے تو یہ تکلیف دینے والا ہلاک ہو جائے گا یعنی عذابِ آخرت میں مبتلا ہوگا۔ (الادب المفرد)

میرے پیارے آقا ﷺکے پیارے دیوانو! آج آپ دیکھتے ہوں گے کہ لوگ کبھی کبھی اپنے پڑوسیوں پراتنا ظلم کرتے ہیںکہ پڑوسی تنگ آکر گھر بدل دیتا ہے اور نقل ِ مکانی پرمجبور ہوجاتا ہے۔ ایسا کرنے والے شخص کے بارے میں خود حضور ﷺ نے فرمایا کہ وہ ہلاک ہو جائے گا۔ یا د رکھیں حضور ﷺ کا فیصلہ اٹل ہے لہذا ہمیں پڑوسی کے معاملہ میں بہت ہی احتیاط رکھنا چاہئے اور اذیت دینے سے گریز کرنا چاہئے۔ اللہ عزوجل سرکاررحمت عالم ﷺ کے صدقہ و طفیل ہم سب پر نظر ِ کرم فرمائے۔

آمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْکَرِیْمِ عَلَیْہِ اَفْضَلُ الصَّلٰوۃِ وَ التَّسْلِیْمِ