⚜️⚜️ اللّٰہ تبارک وتعالیٰ کرے کہ کوئی بھی ایسا نہ ہو⚜️⚜️

🌹 { فَخَلَفَ مِنۢ بَعْدِهِمْ خَلْفٌ أَضَاعُوا الصَّلٰوةَ وَاتَّبَعُوا الشَّهَوٰتِ ۖ فَسَوْفَ يَلْقَوْنَ غَيًّا }

[ سورة مريم : 59 ]

✒️ چند الفاظ کی تھوڑی وضاحت۔

• “الخلف ” اگر لام پر “زبر” کے ساتھ ہو تو صالح ورثاء اور “جزم” ہو تو غیر صالح جسے اردو میں ناخلف کہتے ہیں

• اضاعت صلوة ،

√ نماز ترک کر دینا ، نہ پڑھنا اسے ضائع کرنا ہے ۔

√ سیدنا عبداللہ ابن مسعود و جناب إبراهيم نخعی و جناب سعيد بن المسيب نے نماز میں تاخیر کو اسے ضائع کرنا بتایا ہے .

• ( شهوات ) شراب نوشی و دیگر معاصی ، خواہشات نفس کی اتباع کا مفہوم یہ ہے کہ انہیں اللّٰہ تبارک وتعالیٰ کی اطاعت پر ترجیح دی جائے ۔۔ نفس جو من میں ڈالے بس اسی کے درپے ہو جایا جائے .

ممتاز تابعی مفسر قرآن حضرت مجاهد نے فرمایا

” ایسے لوگ آخر زمان میں ہوں گے ، گلیوں بازاروں میں کچھا کھچ بھرے ہوں گے” .

پیارے قارئین ، حضرت کی یہ بات اب ہمیں حقیقت نظر آ رہی ہے ۔ آج ، کھابوں ، ہوٹلوں اور تفریحی مقامات کی اکثریت دنیا اور آخرت کی ہر فکر سے بے نیاز اور اپنے اللّٰہ تعالیٰ کو ، اور موت کو بالکل بھول چکی ہوئی دکھائی دیتی ہے نہ انہیں دنیا کی کوئی فکر ہے نہ آخرت کی

• ” الغي ” √جهنم میں بہت گہری اور سخت کسیلے کڑوے پانی والی ایک نہر ہے۔

√ ایک نہر جس میں خون ، پیپ ، جہنمیوں کے زخموں سے بہنے والا زرد پیلا پانی ہوگا √ حضرت عبداللہ ابن عباس کا قول ہے : ” الغي ” جهنم کی اس وادی کا نام ہے جس کی گرمی و عذاب سے ، جهنم کی دوسری وادیاں بھی پناہ مانگتی ہیں۔ زنا کی لت میں مبتلا ء ، مستقل شراب نوش ، مسلسل سود خور ، والدین کے زندگی بھر نافرمان اور پیشہ ور جھوٹے گواہوں کو اس میں پھینکا جائے گا ۔

√ جناب كعب نے اس کی کچھ مزید توضیح یوں کی ہے : جهنم میں ” الهيم ” نام کی کنوئیں جیسی وہ وادی جس کی تہ بہت گہری ، تپش و حرارت بہت سخت ہے ، جہنم کی آگ میں كچھ کمی ہونے لگے گی تو الله کے حکم کے مطابق اس کنوئیں کا دہانہ تھوڑا سا کھولا جائے گا تو جهنم پھر سے بھڑک اٹھے گی .

🌷مفہوم آیت ۔

ان انبیاء کرام و صالحین کے بعد کچھ ناخلف ہوئے جنھوں نے نماز کو ضائع کیا اور خواہشات کی پیروی کی تو یہ نااھل جلد ہی وادی ” الغي” میں پھینکے جائیں گے

🤲 اے میرے اللّٰہ ، اے میرے رحیم و رحمان و کریم رب ، میں جو تیری ہر نعمت کا فقیر ہوں ، مجھے ، میرے والدین کو ، اساتذہ کرام کو ، تا قیامت نسلوں کو جہنم سے بعد المشرقین دور رکھنا ۔

یہ کاتب الحروف ، اس کے تمام اھل و عیال اور جمیع احباب نماز کے قائم کرنے والے رہیں ، تیرے طاعت شعار ، اور تیرے دین کے خدمت گذار رہیں۔

آمین یارب العالمین ۔

فقیر خالد محمود

جامع مسجد حضرت سیدہ خدیجہ الکبریٰ رضی اللہ تعالیٰ عنھا و ارضاھا عنا

مصطفی آباد

مانگٹ اور لیدھر کے درمیان

ضلع منڈی بہاؤالدین۔