پیپ، خون اور مواد کی قے

حضرت انس رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے مروی ہے کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے لوگوں کو ایک دن کے روزے کا حکم دیا اور فرمایا کہ میری اجازت کے بغیر کوئی بھی روزہ افطار نہ کرے یہاں تک کہ جب شام ہو گئی تو لوگ آنا شروع ہو گئے اور ہر شخص حاضر ہوکر عرض کرتا یا رسول اللہ ﷺ میں نے دن میں روزہ رکھا مجھے اجازت دیجئے کہ میں افطار کروں، آپ اُ سے اجازت مرحمت فرما دیتے، اسی طرح لوگ آتے گئے اور اجازت لیتے گئے یہاں تک کہ ایک آدمی نے آکر عرض کیایارسول اللہﷺ میرے گھر کی دو جوان عورتوں نے روزہ رکھا ہے وہ آپ کی خدمت میں آتے ہوئے شرماتی ہیں انہیں افطار کی اجازت دے دیجئے، حضور اقدس ﷺ نے اپنا رُخ ِانورپھیر لیا، اس نے پھرعرض کیا آپ نے پھر منھ پھیر لیا اس نے پھر عرض کی تو آپ نے فرمایا وہ شخص کیسے روزہ دار ہو سکتا ہے جس کا دن لوگوں کا گوشت کھاتے گزر جائے تم جائو اور ان سے کہو کہ اگر تم روزہ دار ہوتو کسی طرح قے کرو چنانچہ ان میں سے ہر ایک نے خون کے لوتھڑے کی قے کی، اس شخص نے حضور اکرم نور مجسم ﷺ کی خدمت میں حاضر ہوکر ساری رُوداد سنائی آپ نے اس کی بات کو سن کر فرمایااگر یہ چیز ان کے پیٹ میں موجود رہتی تو انہیں آگ جلاتی۔ ایک روایت کے الفاظ کچھ اس طرح ہیں۔

جب حضور ﷺ نے اس سے منھ پھیر لیا تو وہ کچھ دیر بعد دوبارہ حاضر ہوا اور عرض کی یارسول اللہ ﷺ وہ دونوں مرچکی ہیں یا مرنے کے قریب ہیں حضور ﷺ نے فرمایا انہیں میرے پاس لائو جب وہ آگئیں تو آپ نے پیالہ منگوا کر ان میں سے ہر ایک سے فرمایااس میں قے کروچنانچہ ایک نے پیپ، خون، اور بدبو دار مواد سے پیالہ بھر دیا پھر آپ نے دوسری سے بھی قے کرنے کو کہا تو اس نے بھی ویسے ہی قے کی آپ نے فرمایاان دونوں نے اللہ کے حلال کردہ رزق سے روزہ رکھا اور اللہ کی حرام کردہ اشیاء سے افطا ر کیا ان میں سے ایک دوسرے کے پاس جا بیٹھی اور یہ دونوں مل کر لوگوں کا گوشت کھاتی رہیں یعنی غیبت کرتی رہیں۔ (مکاشفۃ القلوب)

اللہ اکبر ! میرے پیارے آقا ﷺ کے پیارے دیوانو!بتائو اس سے بہتر بھی کوئی طریقہ ہے جس سے غیبت کی اصلیت اور اس کی حقیقت کو سمجھایا جائے؟ غور کریں منھ سے بھی نہیں کھایا گیا اور پیٹ سے گوشت اور پیپ وغیرہ قے میں نکل رہاہے گویا غیبت کرنے والے بظاہر لفظوں سے غیبت کرتے ہیں لیکن حقیقتاً اپنے بھائیوں کا گوشت کھاتے ہیں جس کو تاجدارِ کائنات ﷺ نے قے میں نکلوا کر بتادیا اس کے بعد بھی اگر آج کا مسلمان نہ سمجھے اور مردار بھائی کا گوشت کھاتے رہے تو کتنے افسوس کی بات ہے؟ بہر کیف ہم حضور ﷺ کے امتی ہیں اور اپنے آقاا کے فرمان پر عمل کرنے کا جذبہ ہمارے اندر ہونا چاہیئے۔ آیئے ہم دعا کریں کہ رب کریم اپنے محبوب اکے صدقہ وطفیل ہمیں غیبت سے بچائے۔

آمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْکَرِیْمِ عَلَیْہِ اَفْضَلُ الصَّلٰوۃِ وَ التَّسْلِیْمِ