(۶) عالم اور جاہل کے گناہ میں فرق

۲۴۳۔ عن عبد اللہ بن عباس رضی اللہ تعالیٰ عنہما قال : قال رسول اللہ صلیٰ اللہ تعالیٰ علیہ وسلم : ذَنْبُ الْعَالِمِ ذَنْبٌ وَّاحِدٌ وَ ذَنْبُ الْجَاہِلِ ذَنْبَانِ، قِیْلَ : وَ لِمَ یا رسول اللہ ؟ قال صلی اللہ تعالی علیہ وسلم : ألْعَالِمُ یُعَذَّبُ عَلیٰ رُکُوْبِہِ الذَّنْبَ، وَالْجَاہِلُ عَلیَ رُکُوْبِہِ الذَّنْبَ وَ عَلیٰ تَرْکِ التَّعْلُّمِ۔

حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ تعالیٰ عنہما سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا : عالم کا گناہ ایک گناہ ہے اور جاہل کا گناہ دو ۔ کسی نے عرض کیا :یا رسول اللہ ! علیک الصلوٰۃ والسلام ، کس لئے ؟ فرمایا : عالم پر وبال اسی کا ہے کہ گناہ کیوں کیا ۔ اور جاہل پر ایک عذاب گناہ کا اور دوسرا نہ سیکھنے کا ۔فتاوی رضویہ حصہ اول ۹/۷۴ا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۲۴۳۔ مسند الفردوس للدیلمی ، ۲/ ۲۴۸ ٭ کنز العمال للمتقی ، ۲۸۷۸۴، ۱۰ / ۱۵۳

الجامع الصغیر للسیوطی، ۱/۲۶۴ ٭