أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

فَجَعَلۡنٰهُمۡ سَلَفًا وَّمَثَلًا لِّلۡاٰخِرِيۡنَ۞

ترجمہ:

پھر ہم نے ان کو قصہ پارینہ بنادیا اور بعد کے لوگوں کے لیے ضرب المثل بنادیا ؏

تفسیر:

الزخرف : ٥٦ میں فرمایا : پھر ہم نے ان کو قصہ پارینہ بنادیا اور بعد کے لوگوں کے لیے ضرب المثل بنادیا “۔

یعنی فرعون اور ان کے متبعین کو ہم نے بھولا بسر واقعہ بنادیا اور بعد کے لوگوں کے لیے عبرت اور نصیحت بنادیا۔

سلف ان متقدم لوگوں کو کہ لے ہیں جن کے اعمال نیک ہوں اور اسکی جمع اسلام ہے اور سلف ان متقدم لوگوں کو کہتے ہیں جن کے برے اعمال ہوں اور اس کی جمع سلوف ہے اور اس آیت میں سلف بہ معنی سلف ہے۔

تبیان القرآن – سورۃ نمبر 43 الزخرف آیت نمبر 56