محفوظات برائے 25th September 2021 ء

أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ اِنَّمَا تُوۡعَدُوۡنَ لَصَادِقٌ ۞ ترجمہ: بیشک جس چیز کا تم سے وعدہ کیا جارہا ہے وہ ضرور سچا ہے تفسیر القرآن – سورۃ نمبر 51 الذاريات آیت نمبر 5

مکمل تحریر پڑھیے »


أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ فَالۡمُقَسِّمٰتِ اَمۡرًا ۙ‏۞ ترجمہ: پھر رزق کو تقسیم کرنے والے فرشتوں کی قسم مشکل الفاظ کے معانی امام الحسین بن مسعود بغوی متوفی ٥١٦ ھ لکھتے ہیں : ” فالمقسمت امرا۔ “ وہ فرشتے جو اللہ تعالیٰ کے احکام کے مطابق چیزوں کو مخلوق کے درمیان […]

مکمل تحریر پڑھیے »


أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ فَالۡجٰرِيٰتِ يُسۡرًا ۙ‏۞ ترجمہ: پھر آسانی سے چلنے والی کشتیوں کی قسم مشکل الفاظ کے معانی امام الحسین بن مسعود بغوی متوفی ٥١٦ ھ لکھتے ہیں : ” فالجریت یسرا۔ “ وہ کشتیاں جو پانی میں سہولت سے چلتی ہیں۔ القرآن – سورۃ نمبر 51 الذاريات […]

مکمل تحریر پڑھیے »


أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ فَالۡحٰمِلٰتِ وِقۡرًا ۞ ترجمہ: پھر بادلوں کی صورت میں پانی کا بوجھ اٹھانے والی ہوائوں کی قسم مشکل الفاظ کے معانی امام الحسین بن مسعود بغوی متوفی ٥١٦ ھ لکھتے ہیں : ” فالحملت وقرا۔ “ یعنی وہ ہوائیں جو بادل کی صورت میں پانی کو […]

مکمل تحریر پڑھیے »


أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ وَالذّٰرِيٰتِ ذَرۡوًا ۙ‏۞ ترجمہ: گردو غبار اڑانے والی ہوائوں کی قسم تفسیر: اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے : گردو غبار اڑانے والی ہوائوں کی قسم۔ پھر بادلوں کی صورت میں پانی کا بوجھ اٹھانے والی ہوائوں کی قسم۔ پھر آسمانی سے چلنے والی کشتیوں کی قسم۔ […]

مکمل تحریر پڑھیے »


حافظ ابن حجر عسقلانی پر تنقید کرنے کا سبب
sulemansubhani نے Saturday، 25 September 2021 کو شائع کیا.

حافظ ابن حجر عسقلانی پر تنقید کرنے کا سبب ہم نے اس جگہ طوالت سے بچنے کے لیے صرف ان دو مثالوں پر اقتصار کیا ہے ورنہ” فتح الباری میں ایسی بہت مثالیں ہیں ۔ ہوسکتا ہے کہ کوئی شخص یہ کہے کہ آپ حافظ ابن حجر عسقلانی ایسے عظیم محدث کی عبارات میں تعارض […]

مکمل تحریر پڑھیے »


حافظ ابن حجر عسقلانی کی عبارات میں تعارض اور تضاد صحیح البخاری: ۳۴۸ تک کی شرح میں حافظ ابن حجر عسقلانی کے بھولنے کی یہ چند مثالیں ہیں اور پوری” فتح الباری میں حافظ ابن حجر عسقلانی کے بھولنے کی یہی کیفیت ہے ایک جگہ وہ ایک بات لکھتے ہیں اور دوسری جگہ اس کے […]

مکمل تحریر پڑھیے »


حافظ ابن حجر عسقلانی جس باب میں مزید شرح کا ذکر کرتے ہیں اس باب میں ان کا شرح کو بھول جانا حافظ ابن حجر عسقلانی کا طریقہ یہ ہے کہ جو حدیث صحیح بخاری میں متعدد بار آتی ہے وہ اس حدیث کی مختصر شرح کرنے کے بعد لکھ دیتے ہیں کہ ہم اس […]

مکمل تحریر پڑھیے »


مصنف کے نزدیک ” فتح الباری اور عمدة القاری کا موازنہ حاجی خلیفہ نے جو یہ کہا ہے کہ عمدة القاری‘‘ کو فتح الباری“ کی طرح شہرت اور پذیرائی حاصل نہیں ہوئی تو یہ ان کا اپنا خیال ہے درحقیقت” عمدة القاری کو فتح الباری سے زیادہ شہرت اور پذیرائی حاصل ہوئی ہے اور اس […]

مکمل تحریر پڑھیے »


حاجی خلیفہ کے نزدیک”فتح الباری اور عمدة القاری کا موازنہ حاجی خلیفہ متوفی ۱۰۶۷ھ لکھتے ہیں: بعض فضلاء نے حافظ ابن حجر سے ذکر کیا کہ علامہ عینی کی شرح آپ کی شرح پر راجح ہے کیونکہ ان کی شرح میں جو مباحث و منظم انداز سے پیش کیا گیا ہے اور لغت،نحو،صرف، بلاغت ،استنباط […]

مکمل تحریر پڑھیے »