أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

وَكُلُّ شَىۡءٍ فَعَلُوۡهُ فِى الزُّبُرِ ۞

ترجمہ:

اور انہوں نے جو کچھ کیا ہے وہ سب، صحائف میں لکھا ہوا ہے

القمر :52 میں فرمایا : اور انہوں نے جو کچھ کیا ہے وہ سب صحائف میں لکھا ہوا ہے۔

یعنی پہلی امتوں نے جو نیک کام کئے تھے یا برے کام کئے تھے وہ سب لوح محفوظ میں لکھے ہوئے ہیں یا ان کے صحائف اعمال میں لکھے ہوئے ہیں اس میں بھی مسئلہ تقدیر پر دلیل ہے۔ یعنی لوح محفوظ میں وہ تمام کام پہلے سے لکھے ہوئے تھے جو کام انہوں نے اپنے اپنے وقت میں بعد میں کئے اور علم معلوم کے تابع ہے یعنی جو کچھ انہوں نے بعد میں کیا وہ پہلے سے لکھا ہوا ہے، ایسا نہیں ہے کہ جو کچھ پہلے سے لکھا ہوا تھا اسی کے مطابق انہوں نے کام کئے، کیونکہ معلوم علم کے تابع نہیں ہوتا۔

القرآن – سورۃ نمبر 54 القمر آیت نمبر 52