أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

اِذَا رُجَّتِ الۡاَرۡضُ رَجًّا ۞

ترجمہ:

جب زمین بڑے زور سے ہلا دی جائے گی

” رَجَّت کے معنی

الواقعہ : 4 میں فرمایا : جب زمین بڑے زور سے ہلا دی جائے گی

اس آیت میں ” رجت “ کا لفظ ہے ” رج “ یرج “ کا معنی ہے، تحریک دینا، زلزلہ لانا، جس اونٹنی کا کوہان بہت بڑا ہو اس کو ” ناقۃ رجائ “ کہتے ہیں۔

کلبی نے کہا : جب اللہ تعالیٰ زمین کی طرف وحی کرے گا تو وہ مارے خوف کے لرزنے لگے لگی پھر زمین پر بنی ہوئی ہر چیز منہدم ہوجائے گی اور اس پر نصب پہاڑ ٹوٹ پھوٹ جایں گے اس کا معنی یہ بھی کیا گیا ہے کہ زمین پر بار بار زلزلہ آئے گا۔

القرآن – سورۃ نمبر 56 الواقعة آیت نمبر 4

سورة  الواقعة الآية رقم 4