📿ماہ ربیع الاول کی مناسبت سے اسباق سیرت کا سبق#3️⃣
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
#eidmiladunnabi2022
📜ولادت مصطفی ﷺ کی تاریخ ، دن اور سال کا تعین:
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
رسول اللہ ﷺ کی ولادت مبارکہ عام الفیل کے پچپن دن کے بعد مورخہ 12 ربیع الاول بروز پیر بمطابق 22 اپریل سن 571 عیسوی میں ہوئی۔

✅1۔ امام بیہقی رحمہ اللہ المتوفی 458ھ نے اپنی کتاب دلائل النبوۃ کے پہلے باب کی حدیث نمبر 4 میں نقل فرمایا ہے۔
ولد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم یوم الاثنین لا ثنتی عشرۃ لیلۃ خلت من شھر ربیع الاوّل عام الفیل ۔
ترجمہ: رسول اللہ ﷺ کی ولادت پیر کے دن بارہویں ربیع الاوّل کو عام الفیل میں ہوئی۔

✅2۔ امام ابوبکر بن ابی شیبہ رحمہ اللہ روایت کرتے ہیں کہ :
عن عقان عن سعید بن مینار عن جابر و ابن عباس انھما قال ولد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم عام الفیل یوم الاثنین الثانی عشر من شھر ربیع الاول ۔
ترجمہ :عقان سے روایت ہے وہ سعید بن مینار سے روایت فرماتے ہیں اور وہ حضرت جابر اورحضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنھم سے راوی ہیں کہ رسول اللہ ﷺ کی ولادت باسعادت عام الفیل میں پیر کے روز بارہ ربیع الاول کو ہوئی۔
(سیرۃ النبویہ لابن کثیر جلد 1 صفحہ 199، البدایہ والنھایہ جلد 2، صفحہ 260)
اس روایت کی سند بالکل صحیح ہے اور تمام راوی مستند اور ثقات ہیں۔

✅امام ابن کثیر رحمہ اللہ المتوفی 774ھ اسی حوالے سے بہت سی روایات کو نقل کرنے کے بعد لکھتے ہیں کہ :
وھذا ھو المشھورعند الجمھور۔ یعنی جمہور علماء کے نزدیک نبی اکرم کی تاریخ ولادت 12 ربیع الاول ہی مشہوراور ثابت ہے۔ (سیرۃ النبویہ جلد 1، صفحہ 199)