بالوں میں خضاب لگانا کیسا ہے
sulemansubhani نے Sunday، 18 April 2021 کو شائع کیا.

{بالوں میں خضاب لگاناکیسا ہے } حدیث شریف: حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ سرکارِ اعظم ﷺنے فرمایا جن چیزوں سے بالوں کا رنگ تبدیل کیا جاتاہے ان میں سب سے اچھی چیز مہندی اورتحم ہے۔ (جامع ترمذی ،ص266) حدیث شریف : حضرت سرکارِ اعظم ﷺنے فرمایا کہ آخر زمانہ میں ایک قوم […]

مکمل تحریر پڑھیے »


أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ فَاَقِمۡ وَجۡهَكَ لِلدِّيۡنِ حَنِيۡفًا ‌ؕ فِطۡرَتَ اللّٰهِ الَّتِىۡ فَطَرَ النَّاسَ عَلَيۡهَا ‌ؕ لَا تَبۡدِيۡلَ لِخَـلۡقِ اللّٰهِ‌ ؕ ذٰ لِكَ الدِّيۡنُ الۡقَيِّمُ ۙ وَلٰـكِنَّ اَكۡثَرَ النَّاسِ لَا يَعۡلَمُوۡنَ ۞ ترجمہ: سو آپ باطل پرستوں سے کنارہ کش ہو کر اپنے آپ کو دین حق پر قائم رکھیں […]

مکمل تحریر پڑھیے »


أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ وَاللّٰهُ جَعَلَ لَـكُمۡ مِّنۡۢ بُيُوۡتِكُمۡ سَكَنًا وَّجَعَلَ لَـكُمۡ مِّنۡ جُلُوۡدِ الۡاَنۡعَامِ بُيُوۡتًا تَسۡتَخِفُّوۡنَهَا يَوۡمَ ظَعۡنِكُمۡ وَيَوۡمَ اِقَامَتِكُمۡ‌ۙ وَمِنۡ اَصۡوَافِهَا وَاَوۡبَارِهَا وَاَشۡعَارِهَاۤ اَثَاثًا وَّمَتَاعًا اِلٰى حِيۡنٍ ۞ ترجمہ: اور اللہ نے تمہاری رہائش کے لیے تمہارے گھر بنائے، اور تمہارے لیے مویشیوں کی کھالوں سے خیمے بنائے، […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:- , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , ,
حک العیب فی حرمة تسوید الشیب
sulemansubhani نے Saturday، 19 October 2019 کو شائع کیا.

  📒حک العیب فی حرمة تسوید الشیب سفید بالوں کو کالا کرنے کی حرمت کے بارے میں عیب کو مٹانا📒 ✍امام اہلسنت اعلی حضرت امام احمد رضا خان علیہ الرحمہ جلد 21 رسالہ 6 23.6 Safaid Balon Ko Kala Karny K Bary Me

مکمل تحریر پڑھیے »


میں اپنے بالوں کا دشمن ہوں
sulemansubhani نے Thursday، 28 March 2019 کو شائع کیا.

حدیث نمبر :421 روایت ہے حضرت علی سے فرماتے ہیں فرمایا رسول اﷲ صلی اللہ علیہ وسلم نے کہ جو جنابت میں ایک بال کی جگہ چھوڑ دے جسے نہ دھوئے تو اسے آگ میں ایسا ایسا عذاب کیا جائے گا ۱؎ حضرت علی فرماتے ہیں اسی لیئے میں اپنے بالوں کا دشمن ہوں اسی […]

مکمل تحریر پڑھیے »